تمہاری قسمت میں جھوٹ ہے| محبوب خزاں |

تمہاری قسمت میں جھوٹ ہے| محبوب خزاں |
تمہاری قسمت میں جھوٹ ہے| محبوب خزاں |

  

تمہاری قسمت میں جھوٹ ہے

تمہاری قسمت میں جھوٹ ہے اِ س لیے کہ تم نے

مجھے بتایا کہ اور بھی ہیں

ہماری قسمت میں جھوٹ ہے اس لیے کہ ہم

فریب کھایا کہ اور بھی ہیں

ہماری روحیں تڑپ رہی تھیں  کہ سچ بھی ہو زندگی میں شاید

ہر اک میں شاید کسی میں شاید

بڑی ستم گر تھی شام لیکن وہ آگ ہے رات کا اُجالا

کہ ہم نے سب سوچ کر خوشی سے

بہارِ ہستی کو پھونک ڈالا

ہماری روحیں تڑپ رہی ہیں کہ سچ بھی ہو زندگی میں شاید

ہر اک میں شاید کسی میں شاید

شاعر: محبوب خزاں

(شعری مجموعہ:اکیلی بستیاں؛سالِ اشاعت،1979)

Tumhaari   Qismat   Men   Jhoot   Hay

Tumhaari     Qismat   Men   Jhoot   Hay   Iss   Liay   Keh   Tum   Nay

Mujhay     Bataaya     Keh     Aor     Bhi   Hen

Hamaari     Qismat    Men     Jhoot     Hay    Iss   Liay   Keh   Ham   Nay

Faraib   Khaaya    Keh   Aor   Bhi   Hen

Hamaari   Roohen   Tarrap   Rahi   Theen   Keh   Sach   Bhi   Ho   Zindagi   Men   Shaayad

Har   Ik   Men   Shaayad   Kisi   Men   Shaayad

Barri   Sitamgar   Thi   Shaam   Lekin   Wo   Aag   Hay   Raat   Ka   Ujaala

Keh   Ham   Nay   Sab   Soch   Kar   Khushi   Say 

Bahaar-e-Hasti   Jo   Phoonk   Daala 

Hamaari   Roohen   Tarrap    Rahi   Hen   Keh   Sach    Bhi   Ho   Zindagi   Men   Shaayad 

Har   Ik   Men   Shaayad    Kisi   Men   Shaayad

Poet: Mahboob   Khizan

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -