سعودی عرب کا معاشی بحران سنگین، درجنوں فیکٹریاں چند ماہ میں بند ہوجائیں گی، ہزاروں لوگوں کے روزگار خطرے میں

سعودی عرب کا معاشی بحران سنگین، درجنوں فیکٹریاں چند ماہ میں بند ہوجائیں گی، ...
سعودی عرب کا معاشی بحران سنگین، درجنوں فیکٹریاں چند ماہ میں بند ہوجائیں گی، ہزاروں لوگوں کے روزگار خطرے میں

  

ریاض(نیوزڈیسک) سعودی عرب میں معاشی بحران کی وجہ سے 70کنکریٹ مکس کرنے والے پلانٹ اگلے سال تک بند ہوجائیں گے۔

عرب نیوز نے جدہ چیمبر آف کامرس کے حوالے سے لکھا ہے کہ اس سیکٹر کواپنی قیمتیں50فیصد تک کم کرنی ہوں گی تاکہ کام کو جاری رکھا جاسکے۔جدہ چیمبر کا کہنا ہے کہ حکومت نے ان کی فروخت میں اضافہ کرنے کی کوشش کی تھی اور قیمت 240ریال فی ٹن اور 14ریال فی بیگ مقرر کی تھی لیکن اس کے باوجود یہ سیکٹر مسائل کا شکار ہے۔جدہ چیمبر کے عہدیدار عبداللہ رضوان کا کہنا ہے کہ کچھ پلانٹس میں پروڈکشن کے عمل کو روک دیا گیا ہے۔”یہ میٹریل کافی حساس ہوتا ہے اور اس کی عمر سیمنٹ کو پانی میں گھولنے کے چار گھنٹے تک رہتی ہے۔موجودہ معاشی بحران کی وجہ سے 2017ءتک مزید ایسے پلانٹس بند ہوجائیں گے۔“اس کا کہنا تھا کہ حکومت اور پرائیویٹ سیکٹر کو کنکریٹ مکس سیکٹر کو بچانے کے لئے آگے آنا ہوگاورنہ کافی لوگوں کے روزگار کو خطرہ ہوسکتا ہے۔جدہ چیمبر کے ایک عہدیدار کا کہنا تھا کہ اس سیکٹر میں اربوں ریال لگائے جاچکے ہیں لیکن مملکت میں نئے تعمیراتی منصوبوں کی کمی کی وجہ سے یہ سیکٹر مسائل کا شکار ہے۔

خیال کیا جارہا ہے کہ ان پلانٹس کے بند ہونے سے ہزاروںلوگوں کی نوکریاں خطرے میں پڑجائیں گی۔

مزید : عرب دنیا