شریف خاندان شاہی نظام قائم کرنے کی نا کام کو ششیں کر رہے ہیں ،اعجاز چودھری

شریف خاندان شاہی نظام قائم کرنے کی نا کام کو ششیں کر رہے ہیں ،اعجاز چودھری

لاہور(نمائندہ خصوصی)پاکستان تحریک انصاف پنجاب کے سابق صدر اعجاز احمد چوہدری نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ شریف خاندان پاکستان میں شاہی نظام قائم کرنے کی نا کام کو ششیں کر رہے ہیں ، احتجاج کرنا ہر شہری کا بنیادی حق ہے اسے کو بھی نہیں روک سکتا ،پاکستانی حسنی مبارک نواز شریف کی آمریت آخری سانسیں لے رہی ہے، پانامہ لیکس میں نواز شریف کی کھربوں کی کرپشن پکڑی جا چکی ہے اور وہ قوم کو حساب دینے کی بجائے کچھو وں کا نوٹس لے رہے ہیں۔(ن) لیگ سیاسی جماعت نہیں بلکہ مافیا ہے ،شریف خاندان نے تما م ملکی اداروں کو تبا ہ کر دیا ہے ،پاناما لیکس کی تحقیقات میں تاخیر کے ذمہ دار نواز شریف ہے ،ملک میں کرپشن اور کمیشن کے بانی نواز شریف ہیں ، انہوں نے کہا کہ پنجاب میں رینجر ز آپریشن سے شریف خاندان اور اُن کے حواریوں کی راتوں کی نیندیں حرام ہو چکی ہیں ،آپریشن میں زیادہ تر (ن) لیگ کے جرائم پیشہ افراد پکڑے جا رہے ہیں جس کی وجہ سے (ن) کے حواریوں کی چیخیں نکل رہی ہیں ،(ن) لیگ نے ریاستی دہشت گردی کی انتہا کر دی ہے،شریف خاندان اور اُن کے حواریوں کی بھول ہے کہ پانامہ لیکس اور سانحہ ماڈل ٹاون سے اتنی آسانی سے جان چھوٹ جائے گی ، رانا ثناء اللہ کے قریبی ساتھیوں اور (ن) لیگ کے کونسلروں کے ڈیروں سے پکڑے جانے والا ناجائز اسلحہ ثابت کرتا ہے کہ رانا ثناء اللہ کے دہشت گردوں کے سہولت کار اور انکے دوست ہے اور سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قتل عام کے ذمہ دار بھی رانا ثناء اللہ ہے،انہوں نے کہا کہ پنجاب میں دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں ہے پنجاب میں آپریشن کو تیز کیا جائے دہشت گردوں اور انکے سہولت کاروں کو پکڑ کر سخت سے سخت سزا دی جائے ۔تحریک انصاف کسی کے گھر کا گھیراؤ نہیں بلکہ رائیونڈ میں احتجاج جلسہ کرے گی ، مودی کے یاروں اور کرپشن کے سرداروں کو انجام تک پہنچائے بغیر پی ٹی آئی چین سے نہیں بیٹھے گی ، قوم کے ٹیکسوں کے پیسوں پر حکمران عیاشیاں کر رہے ہیں اور کمیشن کے ذریعے اربوں روپے لوٹ کر ملک سے باہر لے کر جا رہے ہیںیک بعد دیگرے کرپشن کے ریکارڈ کوجلایا جا رہا ہے جس کے ذمے دار حکمران ہے ، اعلیٰ عدالتیں نندی پور پراجیکٹ کے ریکارڈ کو ضائع کرنے کے واقعہ کا از خود نوٹس لینا چاہیے اور ذمے داران کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائے جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1