دہشتگردی کو مدارس اور اسلام سے جوڑنا مغرب کا منفی پروپیگنڈہ ہے، جے یو آئی(ف)

دہشتگردی کو مدارس اور اسلام سے جوڑنا مغرب کا منفی پروپیگنڈہ ہے، جے یو آئی(ف)

مہمند ایجنسی (نمائندہ پاکستان)مہمند ایجنسی، دہشت گردی کو مدارس اور اسلام سے جوڑنا مغرب کا منفی پروپیگنڈہ ہے۔ مدارس میں دینی طلباء کی مثبت ذہن سازی ہوتی ہے۔ علماء امن کے علمبردار ہیں۔ فاٹا میں شرعی نظام کے نفاذ سے مثالی ترقی ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار جمعیت علمائے اسلام مہمند ایجنسی کے امیر مولانا محمد عارف حقانی، مہمند ایجنسی سے سابق سنیٹر حافظ رشید احمد، باجوڑ ایجنسی کے سابق سنیٹر مولانا عبدالرشید اور مولانا مصطفی کمال نے مہمند ایجنسی کے تحصیل امبار چار گلی مدرسہ کی دستار بندی تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اسلام دشمن عناصر کی منفی پروپیگنڈوں کا بھر پور مقابلہ کرتے ہوئے دینی مدارس اور علمائے کرام نے امن کا پیغام اور ثبوت دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا میں ایف سی آر کے ظالمانہ قانون کو ختم کر کے شرعی نظام عدل نافذ کیا جائے۔ اسلامی حقوق ملنے کے باعث ایک صالح معاشرہ تشکیل پائے گا۔ تقریب میں علمائے کرام اور مہمانان نے 10 حافظ قرأن اور 20 ناظرہ قرأن پاک ختم کرنے والے بچوں کی دستار بندی ہوئی اور انہیں انعامات دیئے گئے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...