موٹروے پولیس کی سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کیخلاف درج کی گئی ایف آئی آر سیل کرکے کارروائی روک دی گئی

موٹروے پولیس کی سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کیخلاف درج کی گئی ایف آئی آر سیل ...
موٹروے پولیس کی سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کیخلاف درج کی گئی ایف آئی آر سیل کرکے کارروائی روک دی گئی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نوشہرہ(مانیٹرنگ ڈیسک)نوشہرہ میں موٹروے پولیس کی سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کیخلاف درج کی گئی ایف آئی آر سیل کرکے کارروائی روک دی گئی ہے، آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ سیکورٹی اہل کاروں اور موٹروے پولیس کے درمیان تنازع کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔ایف آئی آر میں موٹر وے اہلکاروں نے موٹر وے اہلکاروں نے موقف اختیار کیا ہے کہ ان کو سکیورٹی اہلکاروں نے ٹارچر کیلئے ان کو ایک گھنٹہ دھوپ میں کھڑا کیا۔

نجی ٹی وی جیونیوز کے مطابق ڈی ایس پی موٹر وے جہان بہادر نے کہاہے کہ موٹروے پولیس کے انسپکٹر عاطف خٹک کی مدعیت میں 33 سکیورٹی فورسز کے اہل کاروں کیخلاف ایف آئی آر درج کر کے سیل کردی گئی ہے۔

نجی ٹی وی نے پولیس ذرائع کے حوالے سے کہاہے کہ سکیورٹی فورسز نے موٹر وے پولیس کیخلاف دی جانے والی درخواست مزید ترمیم کے لیے واپس لے لی ہے ۔ درخواست میں فورسز نے بھی الزام لگایا تھا کہ موٹروے پولیس نے بھی بدتمیزی اور ہا تھا پائی کی تھی۔پولیس کے مطابق اگر سکیورٹی فورسز کی جانب سے دوبارہ درخواست دی گئی تو جائزہ لیں گے اور قانون کے مطابق موٹروے پولیس کے خلاف اگر مقدمہ بنا تو درج کریں گے۔آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ سکیورٹی اہلکاروں اور موٹروے پولیس کے درمیان تنازعے کی تحقیقات کی جاری ہیں، قانون کے مطابق انصاف کےتقاضےپورےکئےجائیں گے۔دوسری طرف موٹر وے پولیس کے اہلکاروں نے ایف آئی آر میں لکھوایا ہے کہ سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں نے ان کی تین سرکاری ایس ایم جیز اور پراڈو  گاڑی نمبر آئی ڈی پی1770 پر بھی قبضہ کر لیا اور  اٹک قلعہ لے جا کرہمیں ٹارچر کرنے کی غرض سے ایک گھنٹہ دھوپ میں کھڑا کئے رکھا۔

مزید : قومی