وزیر خارجہ کا دورہ چین

وزیر خارجہ کا دورہ چین

مکرمی! بھارت کی ہمیشہ سے یہ کوشش رہی ہے کہ وہ پاک چین دوستی میں رخنہ ڈالے اس مقصد کے حصول کے لیے بھارت پاکستان کے خلاف سازشوں پر عمل پیرا رہا ہے ۔ گذشتہ ہفتے بیجنگ میں منعقد ہونے والی پانچ ملکی برکس کانفرنس میں دہشت گردی کے معاملہ پر پاکستان اور چین کے مابین اختلافات پیدا کرنے کی کوشش کی گئی ۔ بھارت کے وزیراعظم نریندرمودی بھی اس کانفرنس میں شریک تھے ۔ لگتا ہے کہ بھارتی سازشیں یہاں بھی کام دکھاگئیں اور کانفرنس میں چین کے بیان سے یہ تاثر ملا کہ شاید دہشت گردی کے معاملہ پر چین کے بھی کچھ تحفظات ہیں یہ ایک سازش تھی جو چین اور پاکستان کے مابین اختلافات پیدا کرنے کی ایک کوشش ہوسکتی ہے ۔ لیکن حکومت نے فوری طور پر اس تاثر کو زائل کرنے کے لیے خواجہ آصف کو چین کے دورے پر بھیجا اور دہشت گردی کے معاملہ پر چینی قیادت کو تفصیل کے ساتھ آگاہ کیا گیا۔ پاکستانی موقف اور پاک چین تعلقات پر بات چیت ہوئی جس کے بعد چینی قیادت کی طرف سے ایسے بیانات آئے جس سے بھارتی سازشوں کا بچھایا ہوا جال بے اثر ہو گیا اور پاکستان کی وزارت خارجہ کے بروقت اقدام سے پاک چین دوستی میں دراڑیں ڈالنے کی بھارتی کوششیں ایک بار پھر ناکامی سے دو چار ہوئیں ۔وزارت خارجہ کو ایسی پالیسی بنانی چاہیے جس کے ذریعے پاکستان کے خلاف سازشیوں کی سازشوں کا بروقت جواب دیا جا سکے۔( ارشدبشیر، جوہر ٹاؤن ،لاہور

مزید : اداریہ