مرگی کے علاج کیلئے گنگا رام ہسپتال میں پہلا ’’ایپی لپسی‘‘ کلینک قائم

مرگی کے علاج کیلئے گنگا رام ہسپتال میں پہلا ’’ایپی لپسی‘‘ کلینک قائم

لاہور(جنرل رپورٹر)گنگا رام ہسپتال میں پہلا ’’ایپی لپسی‘‘ کلینک قائم کر دیا گیا۔ فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر فخر امام نے کلینک کا افتتاح کیا۔انہوں نے نیورالوجی ڈیپاٹمنٹ فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی میں نیوروفائی سولوجی لیب کا بھی افتتاح کیا۔ اس موقع پر فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی کے پرووائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر عامر زمان، پروفیسر ڈاکٹر طاہرہ مرتضیٰ چیمہ،پروفیسر ڈاکٹر احسن نعمان، پروفیسر ڈاکٹر اطہر جاوید، پروفیسر ڈاکٹر منظور احمد، ڈاکٹر نصر اللہ، پروفیسر ڈاکٹر شمسہ ہمایوں، انچارج نیورالوجی وارڈاکٹر محمد عدنان اسلم، دیگرڈاکٹروں، طلبا ، ماہرین اور حکام نے شرکت کی۔ گنگا رام ہسپتال میں اپنی مدد آپ کے تحت قائم ہونے والاکلینک سرکاری ہسپتالوں کاپہلا ’’ایپی لپسی‘‘ کلینک ہے جبکہ سٹیٹ آف دی آرٹ نیوروفائی سولوجی لیب میں ای ای جی، ویڈیو ای ای جی، این سی ایس، ای ایم جی سمیت دیگر جدید؂ترین میڈیکل ٹیسٹوں کی سہولت فراہم کی جائے گی۔ ’’ایپی لپسی‘‘ کلینک اور نیورو فائی سولوجی لیب کے افتتاح کے بعد نیورالوجی وارڈ کے انچارج ڈاکٹر محمد عدنان اسلم نے شرکاء کو پہلے ’’ایپی لپسی‘‘ کلینک اور نیوروفائی سولوجی لیب کے اغراض و مقاصد اور افادیت سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ دنیا بھر میں 5کروڑ افراد مرگی یعنی ایپی لپسی کا شکار ہیں اور عالمی سطح پر سالانہ25لاکھ نئے کیس رپورٹ کئے جاتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں 20لاکھ سے زائد افراد مرگی کے مرض میں مبتلا ہیں۔ مرگی کے مریضوں کی شرح شہروں کی نسبت دیہات میں زیادہ ہے۔ اس کی وجہ توہم پرستی ہے۔

ایپی لپسی کلینک

مزید : صفحہ آخر