436پانامہ زدہ افراد کیخلاف کارروائی نہ ہوئی تو نیب کو تالا لگا دینگے : سراج الحق

436پانامہ زدہ افراد کیخلاف کارروائی نہ ہوئی تو نیب کو تالا لگا دینگے : سراج ...

راولپنڈی(صباح نیوز) امیر جماعت اسلامی پاکستان نے رواں ماہ ستمبر میں پاناما پیپرز کے تحت منظر عام پر آنے والے 436افراد کے خلاف کارروائی شروع نہ ہونیکی صورت میں اکتوبر کے پہلے ہفتے میں احتساب ہیڈ کوارٹرکے سامنے دھرنے کا اعلان کردیا،احتساب ہیڈ کوارٹرکی تالا بندی کی دھمکی بھی دے دی گئی ، برما میں مسلمانوں پر ظلم و بربریت وحشیانہ قتل عام کے خلاف سخت احتجاج کے لئے پاکستان سے میانمار حکومت سے ہر قسم کے تعلقات منقطع کرنے برمی سفیر کو نکالنے اور سفارت خانہ بند کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے انھوں نے تمام مسملم ممالک میں برما کے سفارت خانوں کی بندش کے بھی مطالبہ کیا ہے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کوترک صدرکی طرح روہنگیامسلمانوں کے پاس جاناچاہیے تھا، برما کی وحشت و بربریت کے معاملے پر اسلام آباد میں قبرستان کی خاموشی اور بے حسی کا راج ہے حکمران واشنگٹن کے بجائے مکہ مکرمہ کی طرف رخ کرلیں،امریکہ نے ہمیشہ ہمارے دشمنوں کا ساتھ دیا ہے عوامی احتجاج کے موقع پر حکمرانوں نے برما کے سفارت خانے کی حفاظت کی ہمارے بزدل حکمران سورہے ہیں اورقوم جاگ رہی ہے ، برما کے مسلمانوں پر مظالم کے حوالے سے حکومت پاکستان نے عوام کے جذبات احساسات کی ترجمانی نہیں کی ۔ پاکستان نظریاتی مملکت ہے جہاں بھی مسلمان تکلیف میں ہوں پاکستان کا فرض ہے ان کا ساتھ دیں ۔ پیر کی شب راولپنڈی میں احتساب مارچ کے شرکا ء سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ امیر جماعت اسلامی پاکستان نے فوری طور پر میانمار کے سفیر کو ملک بدر کرنے اور اقوام متحدہ سے برما کی وحشیت وبربریت اور درندگی کے مظاہرے پر اقتصادی پابندیاں لگانے کا مطالبہ کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں کشمیریوں اور فلسطینیوں کا بھر پور ساتھ دینا چاہیے ۔ بزدل حکمرانوں نے قتل عام کے معاملے پر ہمارے جذبات کی ترجمانی نہیں کی ۔ ممتاز قادری جیسے اولیا کا شیر ہے ہمارے نوجوان شاہین ہیں برما میں مسلمانوں کا قتل عام جاری ہے ۔ نوجوانوں کو ننگا کرکے قتل کیا جارہا ہے مساجد کو جلایا جارہا ہے نسل کشی کی جارہی ہے ۔ پاکستان کے وزیراعظم نے 20کروڑ عوام کے حق کی نمائندگی کو ادا نہیں کیا ۔ وزیراعظم کو روہنگیا مسلمانوں کا میزبان بننا چاہیے ۔ آج تک اسلام آباد میں قبرستان کی خاموشی ہے بے حسی کا راج ہے برما سفارت خانے جانا چاہتے تھے ۔ ہمارے راستے میں کنٹینرز کھڑے کردیئے برما کے سفارتخانے کا تحفظ کیا گیا ۔ برما سفارتخانے کو بند کیا جائے اور سفارتی تعلقات منقطع کردیئے جائیں ۔سینیٹرسراج الحق نے کہا کہ بلا امتیاز احتساب کیلئے تحریک جاری رہے گی ۔ پاکستان کو کرپشن فری ملک بنا کر دم لیں گے ۔ یہ کیسا ملک ہے غریب اور امیر کیلئے الگ الگ تعلیمی ادارے ،ہسپتال ہیں ہمیں موقع ملا تو ہم ملک میں ایسی صحت کی جدید سہولیات فراہم کریں گے کہ نوازشریف کے اہلخانہ لندن نہیں جانا پڑے گا۔ حکمران بتائیں نوجوانوں کیلئے کیا کیا بیروزگاری عروج پر ہے بدامنی بھی ختم نہ کرسکے ۔اب احتساب کی تحریک نہیں رکے گی ، سب بدعنوان احتساب کیلئے تیار ہوجائیں ہم آرہے ہیں نیب کرپشن کے خاتمے میں ناکام رہا ہے ۔ 436افراد کے نام منظر عام پر آئے ستمبر میں ان کے خلاف کارروائی کیلئے اقدام نہ اٹھانے پر نیب کے سامنے دھرنا اور نیب کی تالا بندی کردیں گے۔خود تالا لے کر آؤں گااور نیب کو لگا دوں گا۔ قبل ازیں مختلف مقامات پر خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ نیب آصف زرداری کی طرح نوازشریف کو بھی ولی اللہ ثابت کرنے پر تلاہواہے ۔ زرداری کی درجنوں آف شو ر کمپنیاں ہیں مگر انہیں کلین چٹ دے دی گئی ہے اور اب نیب نوازشریف سے مک مکا کر رہاہے ۔ نیب کی اب تک کی کاروائی مایوس کن ہے ۔ محض نواز شریف کو ہٹانے سے قوم کا اصل مسئلہ حل نہیں ہوا ۔ جب تک سب لٹیروں کو احتساب کے کٹہرے میں کھڑا نہیں کیا جاتا ، ہماری تحریک جاری رہے گی ۔ نوازشریف میرا مشورہ مان کر مستعفی ہو جاتے تو عزت بچ جاتی ۔ ریفرنس دائر ہونے کے بعد اسحق ڈار کو فوری طور پر استعفیٰ دے دیناچاہیے تھا حکمران عوام کے خون پسینے کی کمائی پر عیش کر رہے ہیں ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے اپنی قیادت میں لاہور سے اسلام آباد تک احتساب مارچ کے آغاز پر داتا دربار چوک لاہور اور گوجرانوالہ میں بڑے عوامی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ قبل ازیں داتا دربار لاہور سے احتساب مارچ کے شرکا کو شاندار انداز میں اسلام آباد کے لیے روانہ کیا گیا ۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لیاقت بلوچ ، ڈاکٹر فرید احمد پراچہ ، امیر العظیم ، جاوید قصوری ، ذکر اللہ مجاہد ، ضیاء الدین انصاری ، محمد اصغر ، حافظ ساجد انور ، بلال قدرت بٹ ، اصغر علی گجر اور محمد انور گوندل بھی موجودتھے ۔ لاہور سے گوجرانوالہ تک کالا شاہ کاکو، مریدکے اور کامونکی میں احتساب مارچ کا زبردست استقبال کیا گیا ۔ کالا شاہ کاکو میں نیشنل لیبر فیڈریشن کے سینکڑوں مزدوروں نے سراج الحق اور دیگر قائدین کو پھولوں کے ہار پہنائے اور کارواں کے شرکاء پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں ۔ مرید کے میں شیخوپورہ کے ضلعی امیر سرفراز احمد خان کی قیادت میں جماعت اسلامی کے سینکڑوں کارکنوں نے والہانہ استقبال کیا اور شرکاء کو پانی کی بوتلیں دی گئیں ۔احتساب مارچ میں نابینا افراد کے ایک گروپ نے بھی شرکت کی ۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ قوم لٹیروں کے ٹولے کو اقتدار کے ایوانوں کی بجائے جیل کی سلاخوں کے پیچھے دکھنا چاہتی ہے جب تک پانامہ لیکس میں موجود 436 لٹیروں اور بنکوں سے قرضے لے انہیں کنگال کرنے والوں ، شوگر اور ڈرگ مافیا اور سرکاری اثاثوں کو لوٹنے والوں کا احتساب نہیں ہوتا ، ہم چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ نوازشریف کی نااہلی سے کرپشن کا مسئلہ حل نہیں ہو سکا اور جب تک زرداری ، مشرف اور نواز جیسے لوگوں کو قانون کی گرفت میں نہیں لایا جاتا ، کرپشن کا کینسر پھیلتا رہے گا ۔ انہوں نے کہاکہ احتساب کے عمل کو نیب کے ہاتھوں مذاق نہیں بننے دیں گے ۔ گوجرانوالہ پہنچنے پر احتساب مارچ کے شرکاء کا فقید المثال استقبال کیا گیا اور سینیٹر سراج الحق کو بگھی میں بٹھا کر شیراں والا باغ جلسہ گاہ تک لایا گیا جہاں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ 70سال سے ظالم جاگیرداروں ، وڈیروں اور سرمایہ داروں کا ٹولہ عوام کی گردنوں پر سوار ہے اور دونوں ہاتھوں سے قومی وسائل لوٹ رہاہے ۔ یہاں محنت کسان اور مزدور کرتے ہیں اور ان کی محنت کا پھل جاگیردار اور کارخانہ دار کھاتے ہیں ۔ غریب سارا دن محنت مشقت کر نے کے باوجود فاقوں پر مجبور ہے ۔ عام آدمی کو تعلیم ، صحت ، روزگار جیسی بنیادی سہولتیں دستیاب نہیں اور حکمرانوں نے اندرونی و بیرون ملک کرپشن کی کمائی سے بڑے بڑے محل تعمیر کر رکھے ہیں انہوں نے کہاکہ عوام ڈاکوؤں کے اس گروہ کے ہاتھوں یرغمال ہیں اور اسٹیٹس کو کی قوتوں نے ملک پر ایک استحصالی نظام مسلط کررکھاہے ۔ چوروں کو اقتدار کے ایوانوں سے نکالنے اور عام آدمی پر اقتدار کے ایوانوں کے دروازے کھولنے کے لیے ضروری ہے کہ عوام ایک بڑے انقلاب کے لیے تیار ہو جائیں اور اپنے ووٹ کی قوت سے سیاسی و معاشی دہشتگردوں کا راستہ ہمیشہ کے لیے روک دے ۔ امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سرا ج الحق نے احتساب مارچ کے دوران گجرات میں خطاب کرتے ہوئے کہاکہ نوازشریف اسلام آباد سے گھر کی طرف اور میں لاہور سے اسلام آباد کی طرف جارہاہوں، وہ رو رہے تھے اور میں ہنس رہاہوں ۔ پانامہ لیکس نے جہازوں میں اڑنے والوں کو زمین پر لاکھڑا کیا جن کے قدم کبھی زمین پر نہیں ٹکتے تھے وہ تین دن تک سڑک پر خوار ہوتے رہے ۔ نوازشریف کے قافلے نے لالہ موسیٰ کے ایک نوجوان کو کچل کر مار ڈالا مگر نوازشریف نے پلٹ کر نہیں دیکھا اور نہ غمزدہ والدین سے تعزیت کی انہوں نے دس لاکھ روپے بھیج کر غریب والدین کے زخموں پر نمک پاشی کی، بوڑھے باپ نے دس لاکھ روپیہ حکمرانوں کے منہ پر مارا اور کہاکہ مجھے تمہارے پیسے نہیں ،عزت چاہیے ۔ انہوں نے کہاکہ میں امیر اور غریب کے لیے ایک نظام چاہتاہوں ۔ نیب کے پاس ڈیڑھ سو کرپشن کے میگا سکینڈل ہیں جن میں سے درجنوں کئی کئی سال پرانے ہیں مگر نیب ان مقدمات کو کھولنے کے لیے تیار نہیں ۔غریبوں کے لیے نیب لوہے کے چنے اور امیروں کے لیے موم کی ناک ہے ۔سراج الحق نے کھاریاں اور لالہ موسیٰ میں خطاب کرتے ہوئے کہاکہ قوم کی قیادت گیدڑوں کے ہاتھ میں ہے ۔بزدل لیڈر بھارت کے سامنے لیٹے ہوئے ہیں ۔نوازشریف کرپٹ نظام کی پیداوار ہیں ۔ عوام صالح قیادت کے لیے ہمارا ساتھ دیں ۔ انہوں نے کہاکہ ملک کا سب سے بڑا مسئلہ کرپشن ہے جو ملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہی ہے ہم اس کرپٹ نظام کو ختم کرنے کے لیے نکلے ہیں اور ان شاء اللہ کرپشن اور کرپٹ ٹولے سے نجات حاصل کر کے رہیں گے ۔امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سرا ج الحق نے احتساب مارچ گوجر خان پہنچنے پر اپنے مختصر خطاب میں کہاہے کہ نوازشریف کی نااہلی سے مسئلہ حل نہیں ہوا ۔جب تک زرداری مشرف اور نواز دور کے بڑے بڑے ڈاکوؤں کو نہیں پکڑا جاتا ، مسائل حل نہیں ہوں گے ۔ سابقہ اور موجودہ وزیروں مشیروں کے ساتھ ساتھ کرپٹ بیوروکریسی ، جرنیلوں اور ججوں کو پکڑ ا جائے اور سب کا بلاامتیاز احتساب کیا جائے۔ غربت مہنگائی بے روزگاری اور جہالت نوازشریف کے تحفے ہیں ۔ نوازشریف کے کارخانوں میں اضافہ ہوتار ہااور عوام تعلیم ، صحت اور روزگار جیسی سہولتوں سے محروم رہے ۔ انہوں نے کہاکہ نوازشریف کو اللہ نے عاشق رسول ؐ ممتاز قادری کو پھانسی دینے کے جرم میں پکڑا ہے ۔ سراج الحق نے کھاریاں اور لالہ موسیٰ میں خطاب کرتے ہوئے کہاکہ قوم کی قیادت گیدڑوں کے ہاتھ میں ہے ۔بزدل لیڈر بھارت کے سامنے لیٹے ہوئے ہیں ۔نوازشریف کرپٹ نظام کی پیداوار ہیں ۔ عوام صالح قیادت کے لیے ہمارا ساتھ دیں ۔ انہوں نے کہاکہ ملک کا سب سے بڑا مسئلہ کرپشن ہے جو ملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہی ہے ہم اس کرپٹ نظام کو ختم کرنے کے لیے نکلے ہیں اور ان شاء اللہ کرپشن اور کرپٹ ٹولے سے نجات حاصل کر کے رہیں گے ۔

سراج الحق

مزید : صفحہ اول