پارٹی فنڈنگ کیس ، تحریک انصاف کو تفصیلات 18ستمبر تک جمع کرانے کی آخری مہلت

پارٹی فنڈنگ کیس ، تحریک انصاف کو تفصیلات 18ستمبر تک جمع کرانے کی آخری مہلت

اسلام آباد(آن لائن) الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کو پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات 18ستمبر تک جمع کرانے کی اخری مہلت دیدی ہے ،مقررہ تاریخ تک بیرون ملک سے موصول ہونے والے فنڈز کی تفصیلات فراہم نہ کرنے پر اکبر ایس بابر کی درخواست درست تسلیم کر لی جائے گی ۔چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیئے کہ تحریک انصاف نے الیکشن کمیشن کو ریسلنگ کا اکھاڑہ بنا رکھا ہے ،بار بار وکلاء تبدیل کئے جارہے ہیں ،ایک دن ایک وکیل آتا ہے اور دوسرے روز دوسرا ۔چیف الیکشن کمشنر جسٹس سردار محمد رضا کی سربراہی میں گزشتہ روز الیکشن کمیشن کے 5رکنی بنچ نے تحریک انصاف کے خلاف دائر غیر ملکی فنڈنگ کیس کی سماعت کی اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے سینئر ووکلا کی عدم موجودگی پر جونیئر وکیل ثقلین حیدر جبکہ درخواست گزار اکبر ایس بابر کی جانب سے ان کے وکیل احمد حسن پیش ہوئے سماعت کے دوران اکبر ایس بابر کے وکیل احمد حسن نے الیکشن کمیشن کو بتایا کہ پارٹی فنڈنگ کیس پر ہائیکورٹ کا عبوری فیصلہ آچکا ہے اور الیکشن کمیشن نے گذشتہ سماعت کے دوران تحریک انصاف کو ہدایت کی تھی کہ اگلی سماعت تک پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات الیکشن کمیشن میں جمع کرادیں جو ابھی تک جمع نہیں کرائی گئی ہیں۔ انہوں نے الیکشن کمیشن سے استدعا کی کہ الیکشن کمیشن ہماری درخواست پر تحریک انصاف کو غیر ملکی فنڈنگ کی تفصیلات جمع کرانے کا حکم جاری کرے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے اپنی درخواست میں تحریک انصاف کے بیرون ممالک میں سرٹیفکیٹس اور رجسٹریشن کی تفصیلات مانگی ہیں ہمیں یہ ثبوت چاہیے کہ اگر تحریک انصاف کو بیرون ممالک سے 10روپے بھی دئیے گئے ہیں تو وہ پاکستان آئے ہیں یا نہیں۔اس موقع پر چیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا کہ ہائیکورٹ کا تفصیلی فیصلہ کب تک آئے گا۔ انہوں نے کہاکہ ہائیکورٹ نے یہ حکم جاری کیا ہے کہ الیکشن کمیشن تحریک انصاف کے بیرون ممالک سے موصول ہونے والے فنڈز کی تفصیلات کسی دوسرے فریق کو فراہم نہیں کرے گا۔اس موقع پر تحریک انصاف کے وکیل نے کہاکہ اکبر ایس بابر کے وکیل الیکشن کمیشن کا وقت ضائع کر رہے ہیں جس پر چیف الیکشن کمشنر نے مسکراتے ہوئے کہاکہ گذشتہ چاربرسوں سے تو تحریک انصاف ہمارا وقت ضائع کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ گذشتہ سماعت کے دوران تحریک انصاف کے وکیل فیصل چودھری نے اگلی سماعت پر تفصیلات جمع کرانے کی یقین دہانی کرائی تھی جس پر پی ٹی آئی کے وکیل نے کہاکہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے دو ہفتوں میں تفصیلات جمع کرانے کا حکم دیا ہے جس پر الیکشن کمیشن کی خاتون ممبر ارشاد قیصر نے کہاکہ جواب جمع کرانے کیلئے دو ہفتوں کا وقت نہیں دیا گیا ۔ اس موقع پر چیف الیکشن کمشنر نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ آپ چاہتے ہیں کہ ہم آپ کو نوٹس دینا بند کر دیں اور دفتر میں بیٹھ کر فیصلہ دے دیں۔ انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف نے پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات سپریم کورٹ میں جمع کرائی ہیں اس کا مطلب ہے کہ ان کے پاس پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات موجود ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کیس کو التواء دینے کا یہ مطلب تو نہیں ہے کہ پی ٹی آئی چاہتی ہے کہ الیکشن کمیشن کیس نہ سنے۔ انہوں نے کہاکہ تین سال تک یہ معلوم نہ ہوسکا کہ تحریک انصاف کس مقام پر کھڑی ہے۔ انہوں نے کہاکہ غیر ملکی فنڈنگ کی تفصیلات جمع نہ کرنے کا مطلب یہ ہے کہ کچھ غلط ہے۔ اس موقع پر الیکشن کمیشن نے پارٹی فنڈنگ کے حوالے سے پہلے فیصلہ محفوظ کر لیا بعد میں آرڈر جاری کرتے ہوئے تحریک انصاف کو پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات 18ستمبر تک جمع کرانے کی اخری مہلت دیدی ۔اس موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے درخواست گزار اکبر ایس بابر کے وکیل نے کہاکہ تحریک انصا ف گذشتہ کئی برسوں سے الیکشن کمیشن کو اپنے غیر ملکی فنڈنگ کی تفصیلات فراہم نہیں کر رہی ہے اور حکم امتناعی لینے کی کوششیں کرتی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ آج بھی حسب توقع پی ٹی آئی کی جانب سے پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات الیکشن کمیشن کو جمع نہیں کرائی گئی ہیں۔ اس موقع پر تحریک انصاف کے وکیل ثقلین حیدر ایڈووکیٹ نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان تحریک انصاف کا پارٹی فنڈنگ کے حوالے سے ریکارڈ شفاف ہے ہمیں ہائیکورٹ کی جانب سے دوہفتوں میں تفصیلات جمع کرانے کے احکامات دئیے گئے ہیں اور وہ ہم مقررہ وقت سے پہلے ہی جمع کرادیں گے۔

پارٹی فنڈنگ کیس

مزید : صفحہ اول