شریف فیملی کیخلاف 2ریفرنس غلطیوں کے انکشاف پر نیب کو واپس

شریف فیملی کیخلاف 2ریفرنس غلطیوں کے انکشاف پر نیب کو واپس

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) رجسٹرار احتساب عدالت نے شریف خاندان کیخلاف 2ریفرنس نیب کو واپس کردیئے۔ میڈ یا رپورٹس کے مطابق اسلام آباد احتساب عدالت کے رجسٹرار آفس نے لندن فلیٹس اور فلیگ شپ ریفرنسز کی اسکروٹنی مکمل کرکے دونوں ریفرنسز نیب کو واپس کرتے ہوئے نیب کو تکنیکی خامیاں دور کرکے 14 ستمبر تک دوبارہ ریفرنس جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔ذرائع کے مطابق شریف خاندان کیخلاف ایون فیلڈ اپارٹمنٹ اور عزیزیہ اسٹیل مل ریفرنس میں غلطیوں کا انکشاف ہوا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے ریفرنسز میں کچھ صفحات کے نمبر غلط جبکہ بعض صفحات پر نمبر ہی درج نہیں ،علاوہ ازیں ریفرنسز میں کچھ دستاویزات اضافی اور کچھ ضروری دستاویزات لگائی ہی نہیں گئیں۔ قبل ازیں نیب نے شریف خاندان کیخلاف اضافی دستاویزات اسلام آباد کی احتساب عدالت کے رجسٹرار آفس میں جمع کرائیں ۔نیب کی جانب سے اضافی ریکارڈ 8 باکسز میں احتساب عدالت لایا گیا۔ ذرائع کے مطابق اسلام آباد کی احتساب عدالت کے رجسٹرار آفس میں شریف خاندان اور اسحاق ڈار کیخلاف ریفرنسز کی تفصیلی جانچ پڑتال کا عمل جاری ہے جو 14 ستمبر تک مکمل کرلیا جائے گا اور ریفرنسز میں تکنیکی معاملات کو دور کرکے ہی اسے عدالت بھیجا جائے گا۔واضح رہے احتساب عدالت کے رجسٹرار آفس نے گزشتہ روز نیب کے ریفرنسز نامکمل قرار دیتے ہوئے نیب کو ضروری دستاویزات لگانے کا حکم دیا تھا جبکہ نیب ترجمان نے تمام ریفرنس منظور ہونے کا دعویٰ کیا تھا۔

ریفرنسز واپس

مزید : صفحہ اول