A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 0

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

Error

A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 2

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

ایس پی صدر کے ظلم نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی یا د تازہ کر دی،رہنما پی ٹی آئی

ایس پی صدر کے ظلم نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی یا د تازہ کر دی،رہنما پی ٹی آئی

Sep 12, 2018

لاہور(نمائندہ خصوصی) تحریک انصاف کے نومنتخب ایم پی اے ندیم عباس بارا، حاجی ملک کرامت کھوکھر ایم این اے، ملک سرفراز کھوکھر ایم پی اے ، پی ٹی آئی لاہور کے صدرظہیر عباس کھوکھر، مرکزی رہنما اعجاز احمد چوہدری اور جہانگیر حسین بارا نے گزشتہ روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے کرتے ہوئے کہاکہ ایس پی صدر معاذ ظفر نے 28جولائی کو مخالف سیاسی پارٹی کے آلہ کار کا کردار ادا کرتے ہوئے پی ٹی آئی رہنماؤں پر جو ظلم و بربریت کی داستان رقم کی ہے اس نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی یا د تازہ کر دی ہے۔ فرق صرف اتنا ہے کہ اللہ تعالی ٰ نے اپنے کرم سے لوگوں کو ہلاکتوں سے بچالیا ہے۔ اگر سانحہ ماڈل ٹاؤن میں ملوث کر داروں کو کرار واقعی سزا مل جاتی تو دوبارہ کسی کو اس طرح کا ظلم کرنے کی جرات نہ ہوتی۔ پی ٹی آئی کے رہنما اعجاز چوہدری، حاجی کرامت کھوکھر، ملک سرفراز کھوکھر، ظہیر عباس کھوکھر اور ملک ندیم عباس بارا نے مطالبہ کیا ہے کہ ایس پی صدر معاذ ظفر،ایس ایچ او ہنجر وال راناافضل ،ایس ایچ او گرین ٹاؤن،بلال چیمہ،ایس ایچ چوہنگ سجاد چٹھہ اور واقع میں ملوث اہلکاروں کو نوکریوں سے برخاست کرکے جوڈیشل انکوائری کروائی جائے ۔ اس موقع پر ندیم عباس بارا اور حاجی کرامت نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایس پی معاذ ظفر نے مخالفین سے سازباز کرکے فائرنگ اور آتش بازی کا ڈرامہ رچا یا۔ میڈیا، اعلیٰ افسران اور چیف جسٹس پاکستان تک کو گمراہ کیا ان کہنا تھا کہ میرے دفتر یا ڈیرے پر فائرنگ کا کوئی واقع پیش نہیں آیا لیکن پولیس نے ایم این اے حاجی کرامت ، ظہیر عباس کھوکھر ، ملک اسد کھوکھر کے گھروں میں بھی توڑ پھوڑ کی اور لوٹ مار کرتے رہے ۔اس کے علاوہ پی پی 161اور این اے 135کے مختلف علاقوں میں چھاپے مار کر پی ٹی آئی سے ہمدردی رکھنے والے، گھروں دفتروں پر پی ٹی آئی کے جھنڈے اور بورڈ آویزاں کرنے والے لوگوں اور کارکنوں پر دہشت گردی کے جھوٹے مقدمے درج کئے گئے ان کے گھروں میں توڑ پھوڑ کی گئی، مختلف قسم کا سامان،نقدی طلائی زیورات لوٹ لئے گئے۔ سینکڑوں کارکنوں کے موبائل غائب کر دیئے گئے ہیں۔لوگ روز انصاف کی امید لئے میرے دروازے پر آتے ہیں اگر ان کو انصاف نہ ملا تو علاقے کا امن و امان خطرے میں پڑ جائیگا۔ 28جولائی کی رات کو یہ وقوعہ اس وقت پیش آیا جب پی پی 161 سے ن لیگی مخالف امیدوار نے ری کاؤنٹنگ کی درخواست دی ہوئی تھی اور 29تاریخ کی صبح کو ری کاؤنٹنگ ہونا تھی۔لیکن راتوں رات پولیس نے جعلی وقوعہ کو بنیاد بنا کے میرے خاندان کے سارے افراد، میرے کارکنان اور سپوٹران کو گرفتار کر لیا تاکہ پی ٹی آئی کا کوئی بھی نمائندہ ری کاؤنٹنگ کے وقت پاس موجود نہ ہو۔ لیکن عزت اور ذلت دینے والی ذات صرف اللہ کی ہے۔جس نے ہمیں سر خرو کر دیا۔ندیم عباس بارا کا کہنا تھا کہ میں اپنے ساتھ ہونے والے ظلم اور زیادتی کو تو بھول سکتا ہوں لیکن اپنے کارکنان اور عام عوام کے ساتھ ہونے والے ظلم کا حساب ظالموں سے لے کر رہیں گے۔ اس موقع پر پی پی 161سے تعلق رکھنے والے کارکنان اور ظلم کا شکار عوام کی کثیر تعداد بھی موجود تھی جو پولیس گردی کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے اور چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار، وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور گورنر پنجاب چوہدری سرور سے اپنے لوٹے ہوئے مال اور توڑ پھوڑ کی صورت میں ہونے والے نقصان کے اذالے ، جھوٹے مقدمات کے اخراج اور وقوعہ میں ملوث ایس پی معاذ ظفر و دیگر پولیس اہلکاروں کو محکمہ سے برخاست کرنے کا مطالبہ کرتے رہے۔ پریس کانفرنس کے موقع پر ایم پی اے ندیم بارا کی جانب سے ویڈیو بھی دکھائی گئی جس میں نظر آ رہا ہے کہ جہانگیر باراپی ٹی آئی کے ملتان روڈ پر واقع انتخابی دفتر میں کارکنوں کیساتھ بیٹھے تھے کہ اچانک ایس پی معاذ ظفر نے اپنے عملہ کے ہمراہ ہلہ بول دیا اور کارکنان اور ایم پی اے ندیم عباس بارا کے بھائی جہانگیر بارا اور دیگر کارکنوں کو تشدد کا نشانہ بنانے کے بعدگرفتار کرتے دکھائی دے رہا ہے۔

مزیدخبریں