قتل کے مقدمہ کاچالان 11سال بعد بھی عدالت جمع نہ ہوسکا

قتل کے مقدمہ کاچالان 11سال بعد بھی عدالت جمع نہ ہوسکا

  

لاہور(نامہ نگار)پولیس کی جانب سے مقدمہ قتل کا چالان 11سال گزرنے کے بعد بھی عدالت میں نہ بھجوایا جاسکا،متاثرہ شہری مقتول کا بھائی انصاف کے لئے سیشن عدالت پہنچ گیا،ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت میں مقتول کے بھائی رحمت مسیح نے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ 2008ء میں اس کے بھائی لیاقت مسیح کا قتل ہوا جس کا مقدمہ تھانہ ستوکتلہ میں درج کروایاگیا،درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کے موکل کا بھائی 11سال قبل قتل ہوا،کافی عرصہ سے ان کا موکل تھانے کے چکر لگا رہا ہے کہ مقدمہ کاچالان عدالت میں پیش کیا جائے لیکن ہر بار پولیس کی جانب سے یہ کہہ دیا جاتا ہے کہ وہ مقدمہ کی فائل تلاش کررہے ہیں،پولیس جان بوجھ کر اس کے بھائی کا چالان عدالت میں پیش نہیں کررہی،اس سلسلے میں سی سی پی او کو بھی درخواست دے چکے ہیں تاہم کوئی شنوائی نہیں ہو رہی ہے،عدالت سے استدعا ہے کہ مقدمہ کا چالان عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا جائے۔عدالت نے دلائل سننے کے بعد تھانہ ستوکتلہ پولیس سے آئندہ سماعت پرمقدمہ کا ریکارڈطلب کرلیا۔

مزید :

علاقائی -