تشدد سے طالبعلم کی ہلاکت، ورثا کا پولیس کی یقین دہانی پر احتجاج موخر

تشدد سے طالبعلم کی ہلاکت، ورثا کا پولیس کی یقین دہانی پر احتجاج موخر

  

لاہور (کرائم رپورٹر) گلشن راوی میں ٹیچر کے تشدد سے ہلاک ہونے والے حافظ حنان بلال کے ورثا، اہل علاقہ اور تاجروں کے عہدیداروں نے ا حتجاج کیا جس سے ٹریفک کا نظام بھی رک گیا تاہم بعدازاں پولیس کی یقین دہانی کے بعد ورثا ء نے احتجاج موخر کر دیا۔ معلوم ہوا ہے کہ گلشن راوی میں موجود نجی سکول کے اساتذہ کی جانب سے میٹرک کے طالب علم حنان بلال پربہیمانہ تشدد کیا گیا تھا جس سے وہ موقع پر ہلاک ہوگیا تھا۔ بعدازاں پولیس نے مقدمہ درج کرکے 2ملزمان کو گرفتار کرلیا لیکن سکول انتظامیہ کے سربراہ ندیم کیانی کو تاحال گرفتار نہیں کیا جا سکا جس پر گزشتہ روز مقتول کے وارثان والد محمد بلال،انارکلی کے تاجروں میاں سلیم اور فیصل وغیرہ نے بینرز اٹھا کر احتجاج کیا اور کہاکہ ہمارے مرکزی ملزم ندیم کیانی کو بھی گرفتار کیا جائے کیونکہ ایف آئی آر کے مطابق سکول انتظامیہ اس واقعہ کی ذمہ دار ہے اس لئے اس سکول کے سربراہ ندیم کیانی کوجب تک گرفتار نہیں کیا جائے گا اس وقت تک ہمیں انصاف نہیں ملے گا۔ محمدبلال نے کہاکہ پولیس نے ایف آئی آر کے درج تمام ملزمان کو گرفتار نہ کیا تو وہ گورنر ہاؤس یاوزیراعلیٰ ہاؤس کے باہر خودکشی کرنے پر مجبور ہو جائیں گے۔

مزید :

علاقائی -