کراچی میں پاکستان فلم پروڈیوسرز ایسوسی ایشن کے الیکشن کا انعقاد  

  کراچی میں پاکستان فلم پروڈیوسرز ایسوسی ایشن کے الیکشن کا انعقاد  

  

لاہور(فلم رپورٹر)پاکستان فلم پروڈیوسرز ایسوسی ایشن کے الیکشن کا انعقاد کراچی میں ہواجس میں ایگزیکٹو کونسل کے 12 ممبران منتخب کئے گئے جن میں دو مخصوص نشستوں پر خواتین کو منتخب کیا گیا ہے۔ انتخابات کے لئے26 افراد نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے جن میں سے 14 افراد نے کاغذات واپس لے لئے۔منتخب افراد میں شیخ امجد رشید، چیئر مین سی ای او آئی ایم جی سی گروپ،عرفان ملک اے آر وائی فلمز،مومنہ درید ہم فلمز،حسن ضیا ماسٹر مائنڈ فلمز،خالد علی کریو فلمز،وجاہت روف شوکیس فلمز،سرمد سلطان کھوسٹ، سنگیتا مہتاب فلمز، چوہدری ذوالفقار ویٹرن فلمز، محمد اسلم المعراج فلمز، ملک یونس خان فلمز اور عزیز جہانگیری شامل ہیں۔ خواتین کی مخصوص نشتوں سے ابھی ایک نام سامنے آیا ہے اور وہ ہے فضا علی میرزا فلم والا پکچرز کا۔ایسوسی ایشن کے چیئر مین اور وائس چیئرمین کا اعلان 20 ستمبر کو کیا جائے گا لیکن ذرائع نے بتایا ہے کہ میاں امجد رشید کو چیئر مین بنانے جبکہ عرفان ملک کو سینئر وائس چیئرمین بنانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔

  

مجھے شروع سے اپنی منفرد پہچان بنانے کا جنون تھا،نبیل ظفر یاور حیات اور ایوب خاور صاحب کے مشورے پر نام تبدیل کیا

لاہور(فلم رپورٹر)ڈرامہ سیریل ”دھواں“ سے مقبولیت حاصل کرنے والے اداکار نبیل ظفر نے کہا ہے کہ مجھے شروع سے اپنی منفرد پہچان بنانے کا جنون تھا۔ نبیل نے ایک پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کا اصل نام ندیم ظفر تھا اور 1992ء یا 1993ء میں میری پہلی فلم ”فتح“ کی ناکامی کے بعد تو یاور حیات مرحوم اور ایوب خاور صاحب کے مشورے پر نبیل نام رکھا کیونکہ ان کا خیال تھا کہ ”ندیم“ چونکہ نام فلم انڈسٹری کا پہلے ہی بہت بڑا اور مقبول نام ہے تو پوری زندگی پریشانی رہے گی کہ کون سا ندیم ہے اور اس وقت میری عمر 22یا 23سال تھی۔ان کا کہنا تھا کہ مجھے شروع سے اپنی منفرد پہچان بنانے کا جنون تھا اور جب میں شروع میں شوبز انڈسٹری میں آیا تو لوگ مجھے کہتے کہ اس کے بالوں کا سٹائل وحید مراد جیسا ہے اور میری شکل فلم سٹار شاہد جیسی لگتی ہے تو مجھے یہ سن کر بہت اچھا لگتا تھا لیکن میں اپنی ایک پہچان بنانا چاہتا تھا اور چاہتا تھا کہ لوگ مجھے نبیل کے نام سے پہچانیں اور گھر میں میری والدہ کے علاوہ سب مجھے نبیل کہہ کر مخاطب کرتے ہیں۔نبیل نے کہا کہ مجھے پروڈکشن کی مصروفیت کے باعث گھر سے باہر نکلنا پڑتا ہے لیکن خواہش ہے کہ کامیڈی ڈرامہ ”بلبلے“ میں نکمے شوہر کا کردار اصل زندگی میں بھی نبھاؤں کیونکہ وہ کردار نبھانے میں مجھے بہت مزا آتا ہے۔ انہوں کا کہنا تھا کہ میں وقت کا بہت زیادہ پابند ہوں اور میں چاہتا ہوں کہ ”بلبلے“ کی ٹیم بھی وقت کی پابندی کرے لیکن محمود اسلم ”بلبلے“ کے سیٹ پر ہمیشہ لیٹ پہنچتے ہیں کیونکہ انہوں نے شروع سے ہی بتا دیا تھا کہ وہ جلدی نہیں اٹھ سکتے اور میری اور محمود صاحب کی رفاقت کو 28سال کا عرصہ بیت چکا ہے۔

مزید :

کلچر -