قائداعظم ٹرافی کے آغاز سے قبل ہی فاسٹ باﺅلرز ”کوکا بورا“ کی گیند سے شدید پریشان ہو گئے، دو سے تین اوورز بعد ہی گیند کیساتھ کیا ہو جاتا ہے؟ جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں

قائداعظم ٹرافی کے آغاز سے قبل ہی فاسٹ باﺅلرز ”کوکا بورا“ کی گیند سے شدید ...
قائداعظم ٹرافی کے آغاز سے قبل ہی فاسٹ باﺅلرز ”کوکا بورا“ کی گیند سے شدید پریشان ہو گئے، دو سے تین اوورز بعد ہی گیند کیساتھ کیا ہو جاتا ہے؟ جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے نئے ڈومیسٹک سٹرکچر کے تحت قائداعظم ٹرافی کے آغاز سے قبل ہی تنازعات سامنے آنے لگے ہیں اور باﺅلرز نے ’کوکابورا‘ گیند کے معیار پر سوال اٹھا دئیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پی سی بی کی جانب سے اپنے فرسٹ کلاس کرکٹ کے نظام کو بہتربنانے کیلئے نئے سیزن میں کوکا بورا گیند استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاہم فاسٹ باﺅلرز نے اس گیند کے معیار پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہے جن کا کہنا ہے کہ ایک سے دو اوورز کے بعد ہی اس گیند کی شکل تبدیل ہو جاتی ہے، اس کیساتھ ٹورنامنٹ کیسے کھیلا جائے گا۔

فاسٹ باﺅلرز نے کوکا بورا کی گیندوں کو ناکارہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بورڈ کی جانب سے متعارف کرائی جانے والی اس گیند کی دو سے تین اوورز بعد ہی شکل ٹیڑھی ہورہی ہے جبکہ اس کی گرفت میں بھی مسائل درپیش ہیں۔

دوسری جانب پی سی بی کے ذرائع کا کہنا ہے کہ بورڈ کے تحت نئے ڈومیسٹک سیزن میں کوکا بورا سے فاسٹ باﺅلرز کا اصل چہرہ سامنے آجائے گا،اب ان کو اپنی اہلیت ثابت کرنا ہوگی،کوکا بورا کا استعمال فرسٹ کلاس کرکٹ کوبہتربنانا ہے ،یہ گیند ہوم ٹیسٹ اور ون ڈے انٹرنیشنل میچزمیں بھی استعمال ہوگی۔

اس سے قبل ڈومیسٹک سیزن میں استعمال ہونے والی ڈیوک بال کی حوصلہ شکنی دراصل ڈومیسٹک کرکٹرزکوفائدہ پہنچانا ہے، دوسری جانب ایک میچ آفیشل کا کہنا ہے کہ کوکا بورا گیند موجودہ بیٹسمینوں کیلئے سود مند لیکن فاسٹ باﺅلرز کیلئے مشکلات پیدا کرے گی تاہم اس کا اصل فائدہ مستقبل کے کرکٹرزکو ہوگا۔

مزید : کھیل


loading...