”ہم کورٹنی والش کا انٹرویو کرنا چاہتے ہیں کیونکہ۔۔۔“ پی سی بی نے اس مقصد کیلئے کتنے بجے فون کیا اور ان کے ایجنٹ نے کیا جواب دیا؟ ناقابل یقین تفصیلات جان کر آپ بھی حیرت زدہ رہ جائیں

”ہم کورٹنی والش کا انٹرویو کرنا چاہتے ہیں کیونکہ۔۔۔“ پی سی بی نے اس مقصد ...
”ہم کورٹنی والش کا انٹرویو کرنا چاہتے ہیں کیونکہ۔۔۔“ پی سی بی نے اس مقصد کیلئے کتنے بجے فون کیا اور ان کے ایجنٹ نے کیا جواب دیا؟ ناقابل یقین تفصیلات جان کر آپ بھی حیرت زدہ رہ جائیں

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے ایک ذمہ دار کی جانب سے ویسٹ انڈیز کے سابق ٹیسٹ فاسٹ باﺅلر کورٹنی والش کے ایجنٹ کو جمیکا میں فون کرکے پی سی بی کے پینل کی طرف سے انٹرویو لینے کا کہے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق پی سی بی کے ذمہ دار نے جس وقت فون کیا اس وقت جمیکا میں رات کے 2 بج رہے تھے اور کورٹنی والش کے ایجنٹ نے فون تو ریسیو کرلیا لیکن وہ نیند سے جاگ کر غنودگی میں کہہ رہا تھا کہ جناب اس وقت کنگسٹن جمیکا میں رات کے 2 بجے ہیں اور آدھی رات کو کورٹنی والش کو نیند سے جگانا ممکن نہیں ہے، آپ صبح کال کرلیں میں ان سے بات کرکے انٹرویو کا وقت لے لوں گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اگلے دن ویسٹ انڈیز کے سابق فاسٹ باﺅلر سے انٹرویو کا وقت طے ہوا جس کے بعد ان کا انٹرویو لیا گیا لیکن اس سے پہلے ہی پاکستان کرکٹ بورڈ وقار یونس کو باﺅلنگ کوچ بنانے کا فیصلہ کرچکا تھا یہی وجہ تھی کہ وقار یونس نے اپنی اہلیہ کے ساتھ سڈنی سے لاہور کا سفر کیا۔پی سی بی کے حد درجہ ذمہ دار ذرائع کے مطابق پاکستان سے فون کرنے والے کو اس بات کا علم ہی نہیں تھا کہ اس وقت ویسٹ انڈیز میں آدھی رات ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ لاہور میں جب پاکستانی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ اور باﺅلنگ کوچ کے انٹرویوز ہورہے تھے تو انٹرویو لینے والے پینل کے سامنے باﺅلنگ کوچ کیلئے ایک ہی نام وقار یونس کا سامنے آیا جس پر پینل نے حیرت کا اظہار کیا کیونکہ ہیڈ کوچ کیلئے مصباح الحق اور محسن حسن خان کے درمیان مقابلہ تھا۔پینل کے اعتراض پر کہ باﺅلنگ کوچ کیلئے صرف وقار یونس نے ہی اپلائی کیا ہے تو اچانک کورٹنی والش کے ایجنٹ کو نیند سے جگایا گیا۔

مزید : کھیل


loading...