بھارت نے مقبوضہ کشمیر سے آنے والے دریائے چناب کا پانی روک لیا

بھارت نے مقبوضہ کشمیر سے آنے والے دریائے چناب کا پانی روک لیا
بھارت نے مقبوضہ کشمیر سے آنے والے دریائے چناب کا پانی روک لیا

  


سیالکوٹ (صباح نیوز)بھارت نے 1960ء کے سندھ طاس معاہدہ کی خلاف ورزی کرکے مقبوضہ کشمیر سے آنے والے دریائے چناب کا پانی روک لیا جس کی وجہ سے ہیڈمرالہ کے مقام پر دریائے چناب کے پانی کی آمد کم ہوکر 45ہزار چار سو بیس کیوسک رہ گئی اور پانی کمی کی وجہ سے دریائے چناب کا پچانوے فیصد حصہ خشک ہوگیااور سیالکوٹ، نارووال، گوجرانوالہ ودیگر اضلاع کی لاکھوں ایکٹر زرعی اراضی پرفصلوں کو نقصان پہنچ گیا جہاں کسان اور کاشتکار ٹیوب ویلوں کا پانی لگانے پر مجبور ہیں ۔

سندھ طاس معاہدہ کے تحت بھارت دریائے چناب میں ہر لمحہ55ہزار کیوسک پانی چھوڑنے کا پابند ہے لیکن بھارت نے پندرہ سال سے زائدعرصہ سے مقبوضہ کشمیر میں دریائے چناب پر بگلیہارڈیم تعمیر کرکے وہاں پانی روک رکھا ہے جس سے پاکستان کے زرعی رقبہ کو نقصان پہنچا ہے،ترجمان محکمہ ایری گیشن کے مطابق مقبوضہ کشمیر سے آکر دریائے چناب میں شامل ہونے والے ودیگر دریاؤں دریائے مناور توی کے دو ہزار پانچ سو چھیاسٹھ کیوسک پانی اور دریائے جموں توی کے چار ہزار آٹھ سوچار کیوسک پانی کے شامل ہونے سے دریائے چناب کے پانی کی مجموعی آمد باون ہزار سات سو نوے کیوسک رہی تاہم دریائے چناب کے اپنے پانی کی آمد پنتالیس ہزار چار سو بیس کیوسک رہی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /سیالکوٹ


loading...