اقبال زیڈ احمد کو ضمانت پر رہا کیاجائے، سینئر قانون دان خواجہ احمد طارق رحیم نے چیئر مین نیب کو خط لکھ دیا

اقبال زیڈ احمد کو ضمانت پر رہا کیاجائے، سینئر قانون دان خواجہ احمد طارق رحیم ...
اقبال زیڈ احمد کو ضمانت پر رہا کیاجائے، سینئر قانون دان خواجہ احمد طارق رحیم نے چیئر مین نیب کو خط لکھ دیا

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق گورنراور سینئر قانون دان خواجہ احمد طارق رحیم نے اقبال زیڈ احمد کی منی لانڈرنگ کیس میں گرفتاری پر چیئر مین نیب جسٹس جاوید اقبال کوخط لکھ دیا ، خواجہ احمد طارق رحیم کی گرفتاری اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ کی واضح خلاف ورزی ہے ، اقبال زیڈ احمد کو ضمانت پر رہا کیاجائے یا کم ازکم مناسب طبی سہولیات فراہم کی جائیں۔

تفصیلات کےمطابق چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاویداقبال کے نام اپنے خط میں سپریم کورٹ کے سینئر وکیل خواجہ احمد طارق رحیم نے کہاہے کہ اقبال زیڈ احمد سے جس طرح کا سلوک کیا جارہاہے یہ احتساب ایکٹ 2010کی واضح خلاف ورزی ہے،ہمیں اس پر بھی اعتراضات ہیں کہ کراچی نیب کی جانب سے احتساب عدالت کے حکم کے مطابق عمل نہیں کیا گیا ۔ تفتیشی افسر مسٹر فتح کا تفتیش کے دوران اقبال زیڈ احمد کے ساتھ رویہ جارحانہ تھا اور حقیقت تو یہ ہے کہ جس طرح اس تفتیشی افسر کو اس کیس کی انکوائری دی گئی وہ شفاف ٹرائل کے اصولوں کے مکمل خلاف ہے ۔ انہوں نےخط میں کہا کہ اقبال زیڈ احمد  کو ان کے آفس واقع لاہور سے گرفتار کیا گیا تھا،ان کو ناتو اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ 2010کے تحت نوٹس جاری کیا گیااور نا ہی قومی احتساب آرڈیننس1999 کے سیکشن 19کے تحت ان کے بنیادی حقوق کا احترام کیا گیاجس کاحق آئین ملک کے تمام شہریوں کو دیتاہے کہ قانون کے مطابق سب کے ساتھ یکساں سلو ک کیا جائے گا،نیب کی اقبال  زیڈ احمد کے خلاف یہ انکوائری قانون اور قانون کی فطر ت کے خلاف عمل ہے،چیئر مین نیب کو چاہئے کہ اس بات کویقینی بنائیں کہ کسی بھی شخص کو نیب کے انکوائری آفیسر کے سامنے پیش ہونے سے قبل معلومات اور کاغذات کے متعلق بتایا جائے جواس نے نیب کوفراہم کرنے ہیں۔

انہوں نے چیئر مین نیب سے درخواست کی کہ انصاف کے حصول کیلئے اقبال زیڈ احمد کی انکوائری ان کی صحت کومدنظر رکھتے ہوئے لاہور یا اسلام آباد منتقل کی جائے ۔ ان کا کہنا تھا کہ چیئر مین نیب کا یہ اقدام بہت مناسب ہوگا اگر اقبال زیڈ احمد کو مناسب ضمانت پر رہا کردیا جائے یا کم ازکم ان کومناسب طبی سہولیات فراہم کی جائیں ۔ ان کا کہنا تھاکہ اقبال زیڈ احمد دل کے مریض ہیں جن کی دیکھ بھال ڈاکٹر شہریار احمد کررہے ہیں اور ان کوابتک4سٹنٹس ڈالےجاچکےہیں جبکہ وہ ذیابیطس کےمرض میں بھی مبتلا ہیں۔انہوں نے کہا درخواست کے باوجود اقبال زیڈ احمد کو ادویات سٹور کرنے کیلئے ابھی تک ریفریجریٹر کی سہولت مہیا نہیں کی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ جناب چیئر مین نیب ہمارے دومرتبہ سے زائد بار لکھے گئے خطوط پر مناسب احکامات جاری کئے جائیں۔

واضح رہے کہ اقبال زیڈ احمد ایسوسی ایٹڈ گروپ پاکستان کے چیئرمین اور چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیں،سنہ 1965 میں قائم ہونے والا ایسوسی ایٹڈ گروپ پاکستان میں توانائی بالخصوص گیس کے شعبے میں پیداوار، سپلائی، مارکیٹنگ اور ایل پی جی کے شعبے میں وسیع تجربے کا حامل ہے،ایل پی جی کے شعبے میں بانی سمجھے جانے والے جامشورو جوائنٹ وینچر، لوب گیس اور مہران ایل پی جی بھی اسی کا گروپ کا حصہ ہیں۔بھکی میں ریکارڈ مدت میں قائم ہونے والا پاور پلانٹ بھی اقبال زیڈ احمد کی کمپنی پاکستان پاور ریسورس نے ہی قائم کیا تھا جس سے بجلی حاصل ہو رہی ہے جبکہ ان کی دوسری کمپنی سٹار پاور ڈھرکی میں 134 میگا واٹ کا پاور پلانٹ لگا رہی ہے۔ایل این جی کے شعبے میں پاکستان گیس پورٹ کی ملکیت بھی اقبال زیڈ احمد کے پاس ہے جو ایل این جی کی درآمد، ری گیسی فیکیشن اور ترسیل کا کام کرتی ہے۔اقبال زیڈ احمد جہاں پاکستان میں توانائی کے شعبے میں ایک بڑا نام ہیں وہیں انھوں نے ڈیزائن اور میڈیا کے شعبے میں بھی نام کمایا ہے۔انھوں نے نیوز ویک انٹرنیشنل، فوربس، سی این بی سی پاکستان جیسے ادارے اپنے ملک میں قائم کئے۔اقبال زیڈ احمد کو سنہ 2012 میں لاہور چیمبر آف کامرس نے صدر پاکستان ٹرافی سے بھی نوازا جبکہ وہ کئی ایک علمی و ادبی فورمز کے اعزازی سربراہ بھی ہیں۔

مزید : قومی


loading...