وزیر خارجہ کے کشمیر کو انڈین سٹیٹ آف جموں و کشمیر کہنے پر وفاقی وزراءکومذمت کرنی چاہئے تھی، شازیہ مری پھٹ پڑیں

وزیر خارجہ کے کشمیر کو انڈین سٹیٹ آف جموں و کشمیر کہنے پر وفاقی وزراءکومذمت ...
وزیر خارجہ کے کشمیر کو انڈین سٹیٹ آف جموں و کشمیر کہنے پر وفاقی وزراءکومذمت کرنی چاہئے تھی، شازیہ مری پھٹ پڑیں

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پیپلز پارٹی کی رہنما شازیہ مری نے کہاہے کہ ہمیں بہت برا لگا جب وزیر خارجہ نے انڈین سٹیٹ آف جموں وکشمیر کہا ، اس پر کسی حکومتی وزیر کومذمت کرنی چاہئے تھی ۔

جیونیوز کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“میں گفتگو کرتے ہوئے شازیہ مری نے کہا کہ پارلیمان میں جو بھی نعرے لگے ، کشمیر کے حوالے سے حکومت کا جوموقف ہے ، ہمیں بہت برا لگا جب وزیر خارجہ نے کشمیر کو انڈین سٹیٹ آف جموں وکشمیر کہا ، اس پر وفاقی وزراءکومذمت کرنی چاہئے تھی ۔

انہوں نے کہا کہ کیا آپ اتنے کمزور ہوجاتے ہیں کہ آپ کوپتہ ہی نہیں کہ آپ نے کیا کہنا ہے ؟ ان کا کہنا تھا کہ جب ہم نے کہہ دیا کہ انڈین سٹیٹ آف جموں وکشمیر تو پھر ہم اس کو متنازعہ مسئلہ کیوں کہتے ہیں ؟ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جو ذمہ داری کشمیر پر بنتی تھی ، وہ حکومت نے پوری نہیں کی ۔ ہم کہتے ہیں کہ حکومت اپنی ذمہ داری پوری کرے، اپوزیشن کشمیر پر حکومت کاساتھ دینے کو تیار ہے ۔

مزید : قومی


loading...