سپیکر قومی اسمبلی کو پروڈکشن آرڈر واپس لینے پر مجبور کیا گیا،ڈیل کی باتیں عدلیہ پر دباؤ ڈالنے کے لئے ہیں:احسن اقبال

سپیکر قومی اسمبلی کو پروڈکشن آرڈر واپس لینے پر مجبور کیا گیا،ڈیل کی باتیں ...
سپیکر قومی اسمبلی کو پروڈکشن آرڈر واپس لینے پر مجبور کیا گیا،ڈیل کی باتیں عدلیہ پر دباؤ ڈالنے کے لئے ہیں:احسن اقبال

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اور سابق وزیر داخلہ  احسن اقبال نے کہا ہے کہ سپیکر قومی اسمبلی  کو مجبورکیا گیا کہ اسیرانِ جمہوریت کے پروڈکشن آرڈر کو واپس لیں،نواز شریف کے حوالے سے مخالفین عدلیہ پر دباؤ ڈالنے کے لئے ڈیل کی باتیں کرتے ہیں ۔

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئےاحسن اقبال نے کہا کہ حکومت نے چیف الیکشن کمشنر کے خلاف ریفرنس بھیج کر اپنے فاشسٹ چہرے سے ایک اور پردہ اتار دیا ہے,مِسنگ ممبران کے بغیر ایوان کو مکمل نہیں سمجھتے، لیڈر آف اپوزیشن کو معاملات پر بات کرنے کا موقع نہیں دیا گیا۔انہوں نے کہا کہ نوازشریف کی اپیل عدالت میں لگتی ہے اور ہمارے مخالفین کو لگتا ہے کہ انہیں عدالتی ریلیف مل سکتا ہے تو وہ ڈیل کی ڈس انفارمیشن مہم شروع کردیتے ہیں جس کا مقصد عدلیہ پہ دباؤ ڈالنا ہوتا ہے تاکہ عدلیہ شاید اس دباؤ میں آکر انکو ریلیف نہ دے.انہوں نے کہا کہ فضل الرحمٰن صاحب بلاول بھٹو اور شہبازشریف صاحب سے رابطہ کرکے اے پی سی کا اجلاس بلائیں گے جس میں ہم اے پی سی کی سطح پہ لاک ڈاؤن سے متعلق کوئی فیصلہ کریں گے.

مزید :

قومی -