آئیے مسکرائیں 

آئیے مسکرائیں 

  

٭استاد: سال کا سب سے مختصر مہینہ کون سا ہوتا ہے؟ 

شاگرد: جناب مئی اس میں صرف تین حروف ہوتے ہیں۔

٭ایک ان پڑھ بندہ سعودی عرب چلا گیا۔ وہاں گھومنے پھرنے کی غرض سے نکلا۔ ہر جگہ عربی لکھی تھی۔ جہاں دیکھتا چومنا شرو ع کر دیتا۔ کافی دیر اسی طرح کرتا رہا۔ ایک جگہ پر عربی میں کچھ لکھا تھا تو پھر اسے چومنا اور ہاتھ لگانا شروع کر دیا۔ پاس سے گزرتے ہوئے ایک شخص نے کہا۔ ”یہ تم کیا کر رہے ہو؟“ اس نے جواب د یا۔ ”عربی لکھی ہے میں ادب سے چوم رہا ہوں۔“ اس شخص نے جواب دیا۔ ”یہ بیت الخلا ہے۔“۔

٭ایک جگہ دیوار پر کچھ اشتہار اس طرح لگے ہوئے تھے کہ ان کی عبارت آپس میں مل گئی تھی۔ ”آج ایک سیاسی جماعت اور مشہور چیونٹیوں کے درمیان ایک میچ کھیلا جا رہا ہے جس کے ستارے ہیں گھوڑا، چابی اور مہمان اداکار صابن آپ سے درخواست ہے کہ ائیر کنڈیشنڈ مرغ کھانے کے لئے اسٹیڈیم میں آکر ہر قسم کا کپڑا خر یدیں۔

٭اسمبلی کا امیدوار تقریر کرنے کے بعد خاموش ہوا تو کسی نے زور دار آواز میں کہا:”تم جھوٹے اور بے ایمان ہو، میں تمہارے مقابلے میں شیطان کو ووٹ دینا پسند کروں گا“۔

 امیدوار نے مسکراتے ہوئے کہا:”ٹھیک ہے جناب! اگر آپ کا دوست الیکشن میں کھڑا نہ ہوا تو پھر آپ مجھے ہی ووٹ دیجیے گا“۔

٭ماں بیٹے کو جھنجھوڑ کر اٹھاتے ہوئے بولیں: ”حامد! جلدی اْٹھو بیٹا‘ اسکول سے دیر ہو رہی ہے“۔

 حامد: ”امی! میں اسکول نہیں جاؤں گا، وہاں کوئی مجھے پسند نہیں کرتا،بچے مجھ سے نفرت کرتے ہیں،استاد میرا مذاق اْڑاتے ہیں۔ اسکول کا سارا سٹاف مجھے نا پسند کرتا ہے“۔

 امی جان نے پریشان ہو کر کہا: ”مگر بیٹا! اب تم چالیس سال کے ہو گئے ہو اور اسکول کے ہیڈ ماسٹر ہو تم نہیں جاؤ گے تو اسکول اسمبلی میں خطاب کون کرے گا“۔

٭ماسٹر صاحب کلاس میں بچوں کو دودھ کے فائدے بتا رہے تھے۔ انہوں نے ایک بچے سے پوچھا۔ ”اچھا بھئی ظفر ایسی چھ چیزوں کے نام بتاؤ جن میں دودھ ہوتا ہے۔“ ظفر سوچتے ہوئے بولا۔ ”دہی‘ کھیر‘ آئس کریم اور تین بھینسیں۔

٭راحت (اعجاز) سے تمہیں نزلہ زکام تھا۔ تم نے اس سلسلے میں کیا کیا؟ 

اعجاز: میں اس سلسلے میں کبھی کبھار ایک آدھ بار چھینک لیتا ہوں۔

٭استاد:”تمہاری لکھائی دن بدن خراب کیوں ہو رہی ہے؟“ شاگرد:”جناب اس لئے کہ میرے ابو کی خواہش ہے کہ میں ڈاکٹر بنوں۔

٭بادشاہ:(مسخرے سے) تمہیں موت کا حکم دیا جاتا ہے۔ البتہ تمہیں اتنی رعایت دی جاتی ہے کہ موت کا طریقہ تم خود بخود تجویز کرلو۔

مسخرہ:(کچھ سوچ کر)”جناب میں بڑھاپے کی موت مرنا چاہتا ہوں۔“

مزید :

ایڈیشن 1 -