پاک افغان تجارتی راستوں کی بندش، سالانہ اربوں ڈالرزکا نقصان اٹھارہا ہے: سردار حسین بابک 

پاک افغان تجارتی راستوں کی بندش، سالانہ اربوں ڈالرزکا نقصان اٹھارہا ہے: ...

  

پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ پاک افغان تجارتی راستوں کی بندش سے ملک کو سالانہ اربوں ڈالرز کا نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردارحسین بابک نے کہا کہ تجارتی راستوں کی بندش سے ملک میں درآمدات اور برآمداتی تجارت پر انتہائی خراب اثر پڑ ا ہے۔ بے روزگاری میں اضافہ ہوا ہے اور تجارتی راستوں کی بندش نے دونوں ممالک کو نقصان پہنچایا ہے۔ تجارتی راستے کھولنے سے پختونخوا کے لاکھوں نوجوان جو بیرونی ممالک میں روزگار کیلئے در بدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں، مستقل واپسی ممکن بنائی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان تجارتی راستوں کے کھولنے سے خیبرپختونخوا تجارت اور کاروبار کی عالمی منڈی بن جائیگی۔ دونوں ممالک کے برادرانہ اور دوستانہ تعلقات مضبوط ہوجائیں گے اور دہشتگردی کے خلاف جنگ بھی کامیابی سے ہمکنار ہوسکتی ہے۔ سردارحسین بابک نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تجارتی راستے کھلنے سے پاکستان دنیا کا امیرترین ملک بن جائے گا۔ حکومت ملک کو ترقی کی راہ پر ڈالنے کیلئے تجارتی راستے کھولنے میں سنجیدگی کا مظاہرہ کریں۔ ہمارے ملک اور بالخصوص ہمارے صوبے کا نوجوان اور تجارتی طبقہ وسط ایشیا اور یورپ تک تجارتی سرگرمیوں کو فروغ دیں گے اور لاکھوں نوجوانوں کو مناسب معاوضے اور عزت وقار کا روزگار مل جائیگا۔ اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری کا مزید کہنا تھا کہ دونوں ممالک حکومتی، سفارتی اور عوامی رابطوں کے ذریعے آمدورفت اور تجارت کے ماحول کیلئے راہیں ہموار کریں۔ سردارحسین بابک نے کہا کہ ہمارا صوبہ قدرت یوسائل سے مالامال اور افرادی قوت میں خودکفیل ہے لیکن ماحول سازگار بنانے کیلئے سب کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ لاکھوں پختون نوجوان خلیجی اور دوسرے ممالک میں انتہائی مشکل سے محنت مزدور کرکے اپنا گھر بار پال رہے ہیں۔ وقت کی ضرورت ہے کہ پاک افغان تجارتی راستوں کو کھولنے کیلئے ہر فورم پر آواز اٹھائی جائے اور اے این پی یہ آواز اٹھاتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ پختونون کے حقوق کی جنگ لڑنے کیلئے کسی مصلحت کا شکار نہیں ہوئی اور نہ ہوگی۔ پاک افغان تجارتی راستوں کے کھولنے سے ملک اور بالخصوص پختون قوم اقتصادی اور معاشی طور پر مضبوط ترین قوم 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -