بداخلاقی کے مجرمان کو نامرد بنانے کا بل اسمبلی سے منظور کرائیں گے، فیصل واڈا 

         بداخلاقی کے مجرمان کو نامرد بنانے کا بل اسمبلی سے منظور کرائیں گے، ...

  

کراچی(این این آئی)وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا نے کہاہے کہ بداخلاقی کے مجرمان انسان نہیں جانور ہیں، انہیں نامرد بنانے کا بل اسمبلی سے منظور کراکر دکھاؤں گا  مجرموں کو سزائیں دیں گے تو ہی ڈر پیدا ہوگا، درندہ صفت انسانوں کیلئے پھانسی کا قانون ہونا چاہیے جو ہیومن رائٹس کے چیمپئن بنتے ہیں انکے ساتھ اس طرح کے واقعات ہوں تو پھر ان سے پوچھوں گا،پولیس اس کیس پر صحیح سے کام کر رہی ہے وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا نے کراچی کے علاقے عیسی نگری میں ننھی مروا کے قتل پر ان کے اہل خانہ سے تعزیت کی اور ہر طرح کے تعاون کی مکمل یقین دہانی کرائی اس موقع پر  میڈیا سے بات چیت  میں کہا کہ مروہ کیساتھ جو واقعہ پیش آیا وہ بہت تکلیف دہ ہے، مرواہ کے والد اور داداکہہ رہے ہیں ہماری بیٹی چلی گئی باقی کو بچالیں انہوں نے بتایا کہ 17لوگوں کاڈی این اے ٹیسٹ لیا گیا ایک آدمی کو پکڑا گیا ہے، جولوگ خواتین سے بداخلاقی کررہے ہیں وہ انسان نہیں جانورہیں بچی کو جس طرح مارا گیا ایسے تو جانور کو بھی نہیں ماراجاتا وفاقی وزیر نے کہا کہ ایسے مجرموں کو نامرد بنانے کی سزا کے قانون کو اسمبلی سے منظورکراکر دکھاؤں گا  میں نے ایسے مجرموں کیلئے سرعام پھانسی کی بات اٹھائی ہے قانون بننے کے بعد عدالت میں 2ہفتے میں فیصلہ ہوناچاہیے، مجرم کو اپیل کیلئے بھی صرف2ہفتے ملنے چاہیے میری وزیراعظم سے اس حوالے پرتفصیل سے بات ہوئی ہے۔فیصل واوڈ نے کہا کہ جوان بچی کو بلیک میل کرکے اسے خودکشی پر مجبور کیا جاتا ہے، مرواہ میری، بلاول بھٹو،شاہدخاقان کی بھی بیٹی کی طرح ہے ایسے لوگوں کوشرم آنی چاہئے جوایسے وقت پربھی کردارکشی کی بات کرتے ہیں وفاقی وزیر آبی وسائل  نے کہاکہ تمام سیاسی ومذہبی جماعتوں سے بھی کہتاہوں خداراکھڑے ہوں،  مجرموں کو سخت سزائیں دیں گے تو ہی ڈر پیدا ہوگا۔فیصل واوڈ نے کہاکہ اس جہالت پرمجرموں کو کڑی سے کڑی سزاملنی چاہئے، پھانسی سے پہلے جوتیزی سے قانونی بل پاس کرانا ہے وہ نامرد کا بل ہے، نامرد بل کے بعد کوشش ہوگی کہ سرعام پھانسی کابل پاس کرائیں۔انھوں نے کہا کہ غلام نبی میمن ایماندارافسرہیں انہوں نے کہامرواہ میری بیٹی ہے، 35 سال میں کراچی میں بدقسمتی سے ڈی این اے لیب بھی نہ بن سکی، وکیلوں سے بات ہوئی ہے،یہ بل لے کر اسمبلی جارہاہوں، گھناؤنے جرم کے خلاف ہمیں اس مشن کو جاری رکھنا ہے، اس بل پرکام شروع کرچکا ہوں ا نہوں نے کہاکہ  سی سی پی او نے جس وقت یہ بات کی وہ مناسب نہیں تھا، مجرموں کو 48گھنٹے میں پکڑلیں تو شاید سی سی پی او کے بیان کا ازالہ ہو جائے۔

فیصل واڈا 

مزید :

صفحہ اول -