بین الافغان امن مذاکرات آج سے دوحہ میں شروع ہونگے، امریکی اور پاکستان کا خیر مقدم

    بین الافغان امن مذاکرات آج سے دوحہ میں شروع ہونگے، امریکی اور پاکستان کا ...

  

 دوحہ، اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،آن لائن) افغانستان میں امن کے لیے بین الافغان مذاکرات  آج (ہفتہ) سے  شروع ہوں گے، امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے تاریخ کا اعلان کیے جانے کا خیر مقدم کیا ہے۔قطری حکومت نے اعلان کیا ہے کہ بین الافغان مذاکرات ہفتے سے دوحہ میں ہوں گے، فریقوں کے درمیان یہ اہم براہ راست مذاکرات افغانستان میں دائمی امن لانے کی جانب پیشقدمی کی علامت ہیں۔  طالبان وفد کے ترجمان محمد نعیم وردک کے مطابق یہ افتتاحی میٹنگ ہے۔امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ یہ تاریخی لمحہ اور افغانستان کے لیے بہترین موقع ہے کہ وہ 40 برس سے جاری جنگ اور خونریزی ختم کرے۔  وزیر اعظم عمران خان نے انٹرا افغان مذاکرات کے آغاز کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ آخر کار ہماری مشترکہ کوششیں رنگ لائیں، اس دن کا انتظار افغان عوام کئی سالوں سے کر رہے تھے۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ افغانستان 40 سال سے تنازعات اور خوں ریزی سے دوچار رہا ہے، پاکستان نے بھی افغان تنازعات کا خمیازہ بھگتا، دہشت گردی، قیمتی جانوں کا ضیاع اور بھاری معاشی نقصان اٹھایا گیا، اب ہماری مشترکہ کوششیں رنگ لے آئی ہیں، انٹرا افغان مذاکرات کا آغاز ہو رہا ہے،  روز اول سے کہہ رہا ہوں کہ افغان تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں ہے، واحد راستہ مذاکرات اور سیاسی تصفیہ ہی ہے،وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا پاکستان نے افغان امن عمل کو آسان بنانے میں ایک اہم کردار ادا کیا ہے، اپنے حصے کی ذمہ داری کو پورا کرنے پر ہم خوشی محسوس کر رہے ہیں، اب افغان رہنما اس تاریخی موقع سے فائدہ اٹھائیں۔انھوں نے کہا افغان قیادت مل کر تعمیری انداز میں کام کریں، کوشش کریں کہ وسیع البنیاد اور جامع سیاسی تصفیے کو محفوظ بنایا جا سکے، افغان حکام کی زیر قیادت یہ مفاہمتی عمل افغانستان، علاقائی امن کے لیے ناگزیر ہے،وزیر اعظم نے مزید کہا ہم امید کرتے ہیں تمام فریق اپنے اپنے وعدوں کا احترام کریں گے، فریقین کو تمام چیلنجز کا مقابلہ کرتے ہوئے ثابت قدم رہنا ہوگا، ہم مطلوبہ نتائج کے حصول کے لیے  پر عزم رہیں گے، پاکستان امن اور ترقی کے اس نتیجہ خیز سفر میں اپنا کردار ادا کرے گا، ہم افغان عوام کے ساتھ مکمل حمایت اور یک جہتی کا اظہار کرتے ہیں۔امریکہ نے افغانستان امن مذاکرات کے  12ستمبر سے آغازکا خیرمقدم کیاہے   ان مذاکرات کا آغاز افغانستان کے لئے چار دہائیوں تک جاری جنگ و خونریزی کے خاتمے کے تاریخی موقع  فراہم  کرتا ہے۔افغانستان کے عوام نے کئی  عشرو ں  سے جنگ کا بوجھ اٹھایا ہے اور  وہ امن کی  امید  میں ہیں۔ صرف  ا فغانو ں کے اپنے  اور، افغان زیرقیادت سیاسی عمل کے ذریعے  جماعتیں پائیدار امن حاصل کرسکتی ہیں۔ یہ عمل خواتین اور نسلی اور مذہبی اقلیتوں سمیت تمام افغان برادریوں کے خیالات کا احترام کرتا ہے ۔ اس موقع کو ضائع نہیں ہونے دینا  چاہئے۔ افغانستان کے عوام کی بے پناہ قربانی اورہمارے شراکت دار امریکہ  کی  سرمایہ کاری نے امید کے اس لمحے کو ممکن بنایا ہے۔پاکستان نے جمعہ کے روز قطر میں ہفتے سے شروع ہونے والے بین الا افغان مذاکرات کیا علان کا خیر مقدم کیا ہے۔افغان حکومت،طالبان، امریکہ اور قطر نے جمعرات کی شب اعلان کیا کہ طالبان اور افغان حکومت کے وفد کے درمیان بات چیت کا آغاز ہفتے کو ہوگا۔افغانستا ن کیلئے پاکستان کے خصوصی نمائندے محمد صادق نے جمعہ کے روز کہا کہ پاکستان 12 ستمبر سے دوحہ میں تاریخی بین الا فغان مذاکرات کے آغاز کا خیر مقدم کرتا ہے ۔صادق نے ٹویٹ میں کہا ہے کہ ہمیں امید ہے یہ مذاکرات افغانستان میں پائیدار امن کا پیش خیمہ ثابت ہوں گے جس سے  ملک میں خوشحالی آئیگی۔ہماری جانب سے اس عمل کی مضبوط حمایت جاری رہے گی۔

دوحہ مذاکرات

مزید :

صفحہ اول -