بھارت میں قتل کئے گئے 11 پاکستانی ہندوؤں کا مقدمہ پاکستان میں درج 

    بھارت میں قتل کئے گئے 11 پاکستانی ہندوؤں کا مقدمہ پاکستان میں درج 

  

نئی دہلی (این این آئی)بھارتی شہر جودھپور میں 11 پاکستانی ہندوؤں کے قتل کامقدمہ پاکستان میں درج کرلیا گیا ہے مقدمہ سندھ کے شہر شہداد پور کے تھانہ میں مقتول خاندان سے تعلق رکھنے والی شریمتی مکھنی بھیل کی مدعیت میں درج کیا گیا مقدمہ میں دہشت گردی ایکٹ اور قتل کی دفعات شامل کی گئی ہیں شہداد پور تھانہ میں بیٹی شریمتی مکھنی بھیل نے ایف آئی آر میں موقف اختیار کیا ہے کہ مقتولین میں ان کے ماں باپ، بہن بھائی اور خاندان کے دیگر لوگ شامل ہیں انہوں نے بتایا کہ پورے خاندان کو راجستھان کے گاؤں لونا میں اگست 2020ء میں قتل کیا گیا مکھنی بھیل نے موقف اختیار کیا کہ آر ایس ایس کے دہشت گرد اور بی جے پی کے غنڈے رات 3 بجے گھر میں داخل ہوئے 80 سالہ والد، 75 سالہ والدہ سمیت پورے خاندان کو زہریلے انجکشن لگا کر قتل کیا گیا۔مکھنی بھیل نے مطالبہ کیا کہ بھارت میں قتل کیے گئے ہندو پاکستانی تھے، ریاست پاکستان انہیں انصاف دلائے۔انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی پر عالمی عدالت انصاف سے رجوع کیا جائے اور آر ایس ایس اور بی جے پی کو دہشت گرد تنظیمیں قرار دیاجائے۔مکھنی بھیل نے یہ بھی بتایا کہ قتل کئے گئے پاکستانی ہندوؤں کا خاندان 2012ء میں روز گار کیلئے راجستھان گیا تھا۔

مقدمہ درج 

مزید :

صفحہ اول -