پاکستان کو اسلامی، جمہوری، فلاحی ملک بنانے کا خواب ابھی اھورا ہے 

    پاکستان کو اسلامی، جمہوری، فلاحی ملک بنانے کا خواب ابھی اھورا ہے 

  

 لاہور(لیڈی رپورٹر) اللہ تعالیٰ کے فضل وکرم اور قائداعظمؒ کی محنت و لگن سے ہمیں پاکستان کی صورت میں یہ پناہ گاہ ملی،قائداعظمؒ نے برصغیر کے مختلف گوشوں میں مقیم مسلمانوں کو ایک قوم کی شکل میں متحد کیا۔ ہمیں ان کے فرمان”ایمان،اتحاد تنظیم“ کو اپنا مقصد حیات بنالینے کا عزم کر نا چاہیے۔ پاکستان اللہ تعالیٰ کی بہت بڑی نعمت ہے لہٰذا اس کی قدر کریں اور اس کو مضبوط بنائیں۔ قائداعظمؒ کے پاکستان کو  اسلامی جمہوری فلاحی ملک بنانے کا خواب ابھی ادھورا ہے، ہم اسے پایہئ تکمیل تک پہنچانے کی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ ان خیالات کااظہار نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام مقررین نے خصوصی آن لائن نشست کے دوران کیا۔ نشست سے خطاب کرتے ہوئے  چیئرمین محمد رفیق تارڑ نے کہا کہ قائداعظمؒ نے سچ اور دلیل کی قوت سے پاکستان حاصل کیا۔ وہ نہ بکنے والے تھے اور نہ جھکنے والے۔ سٹینلے والپرٹ نے قائداعظمؒ کے بارے میں لکھا کہ بہت کم لوگ ایسے ہوتے ہیں جو تاریخ کا رخ بدل دیں، اور ایسے لوگ اس سے بھی کم ہوتے ہیں جو تاریخ اور جغرافیہ دونوں بدل دیں جبکہ بہت ہی کم لوگ ہوتے ہیں جو تاریخ اور جغرافیہ بدلنے کے ساتھ ساتھ نیا ملک بھی تخلیق کر دیں اور قائداعظمؒ نے یہ تینوں کام کر دکھائے۔ گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے کہا کہ قائداعظمؒ نے ہمیں ”ایمان، اتحاد اور تنظیم“ کا درس دیا۔ اگر ہم قائداعظمؒ کے اصولوں پر چلیں گے تو پاکستان ترقی بھی کرے گا اور دنیا کی کوئی طاقت پاکستان کا وجود ختم نہیں کر سکتی۔ سابق وزیر خزانہ سرتاج عزیز نے کہا کہ دنیا میں جتنے بھی ممالک آزاد ہوتے ہیں ان کو درپیش مسائل کے حل کیلئے ان کے بانیان کا بڑا اہم کردار ہوتا ہے۔یہ ہماری بدقسمتی تھی کہ قائداعظمؒ جلد ہی رخصت ہو گئے۔میاں فاروق الطاف نے کہا کہ برصغیر کے مسلمانوں کی خوش قسمتی تھی کہ انہیں قائداعظم محمد علی جناحؒ جیسا دیدہ ور نجات دہندہ نصیب ہوا جس نے انگریز سامراج اور ہندو بنیے سے پاکستان چھین لیا۔ افتخار علی ملک نے کہا کہ قائداعظمؒ نے ایک آزاد ملک مسلمانان برصغیر کو لیکر دیا۔ آج ہم جو کچھ ہیں اسی آزادی کی بدولت ہیں۔ علامہ محمد اقبالؒ کی بہو جسٹس (ر) ناصرہ جاوید اقبال نے کہا کہ قائداعظمؒ نے احترامِ انسانیت کا درس دیا چنانچہ ہم میں سے ہر ایک دوسرے کا احترام کرے۔ چودھری اقبال نے کہا کہ زندہ قومیں ہمیشہ اپنے محسنوں کو یاد رکھتی ہیں اور جو قومیں ایسا نہیں کرتیں وہ صفحہ ہستی سے مٹ جاتی ہیں۔ تقریب سے کرنل(ر) سلیم ملک، بیگم مہناز رفیع،چودھری نعیم حسین چٹھہ،جاوید صدیق، ڈاکٹر پروین خان،بیگم صفیہ اسحاق،بیگم خالدہ جمیل،وقار احمد میاں، شاہد رشید  نے بھی خطاب کیا۔قبل ازیں قرآن خوانی کی محافل منعقد ہوئیں جن میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کثیر تعداد میں موجود تھے۔

نظریہ پاکستان ٹرسٹ

مزید :

صفحہ آخر -