نیوی کارول ملک کا دفاع کرنا ہے ، یہ سیلنگ یا کلب بنانے کارول کہاں ہے ؟،چیف جسٹس اطہر من اللہ کا وکیل سے استفسار

 نیوی کارول ملک کا دفاع کرنا ہے ، یہ سیلنگ یا کلب بنانے کارول کہاں ہے ؟،چیف ...
 نیوی کارول ملک کا دفاع کرنا ہے ، یہ سیلنگ یا کلب بنانے کارول کہاں ہے ؟،چیف جسٹس اطہر من اللہ کا وکیل سے استفسار

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان نیوی سیلنگ کلب کی تعمیر کیخلاف کیس میں چیف جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ نیوی کارول ملک کا دفاع کرنا ہے ، یہ سیلنگ یا کلب بنانے کارول کہاں ہے ؟۔

اسلام آبادہائیکورٹ میں راول جھیل کے کنارے پاکستان نیوی سیلنگ کلب کی تعمیر کیخلاف کیس کی سماعت ہوئی،وکیل اشتراوصاف نے کہاکہ تمام میٹنگ منٹس اور متعلقہ دستاویزات عدالت میں جمع کرا دیں ۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ نیوی کارول ملک کا دفاع کرنا ہے ،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے استفسارکیا کہ نیوی کا یہ سیلنگ یا کلب بنانے کارول کہاں ہے ؟۔چیف جسٹس اطہر من اللہ نے وکیل اشتراوصاف سے مکالمہ کرتے ہوئے کہاکہ قانون میں بتائیں کہاں لکھا ہے؟،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ دلائل سے لگ رہا ہے کیا پہلے سول حکومت کہے گی کوئی ادارہ چلانے میں ہم فیل ہو گئے ؟۔کیاآپ یہ کہناچاہتے ہیں پی آئی اے ،واپڈافیل ہو گیا اس لئے آپ کو بلا رہے ہیں ؟

آپ کے دلائل سے لگ رہاہے سی ڈی اے تباہ ہو گیا ،سی ڈی اے نے آپ کو بطور ریگولیٹر نوٹس جاری کیا،وکیل اشراوصاف نے کہاکہ نہیں !میں ایسا کچھ نہیں کہہ رہا،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ سی ڈی اے نے جتنی جگہ آپ کو اسلام آباد میں دے رکھی ہے وہ کتنی ہے؟،وکیل اشتراوصاف نے کہاکہ اس وقت مجھے نہیں پتہ وہ کتنی ہے ۔

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ جس وفاق کے آپ ماتحت ہیں اس کے کس افسر نے آپ کو کہاں اجازت دی،کوئی بلڈنگ پلان کوئی منظوری کچھ نہیں تھااورآپ اس کاافتتاح کرنے چلے گئے ،عدالت نے کہاکہ جب ریگولیٹر نے آپ کو نوٹس کردیاتو پھر آپ اس پر کیسے ایکٹیویٹی جاری رکھ سکتے ہیں 

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ یہ معاملہ قانون اور رول آف لا کے احترام کا ہے ،ہم تین چار فیصلے دے چکے ہیں 1960 سے لے کر ابتک قانون کیا ہے،دلائل سے لگ رہاہے ایسے فیصلوں سے سارے وزیراعظم آج نیب بھگت رہے ہیں 

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ کیا کابینہ ڈویژنے کوئی منظوری دی؟اس حوالے سے آپ کے پاس کچھ ریکارڈ نہیں،اگرایسا ہوآپ کے پاس اور نہ سی ڈی اے کے پاس کوئی منظوری کا ریکارڈ ہو توکیا ہوگا؟۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -