ڈی این اے ٹیسٹ کٹس کے لیے 5 کروڑ 44لاکھ کے فنڈز جاری

ڈی این اے ٹیسٹ کٹس کے لیے 5 کروڑ 44لاکھ کے فنڈز جاری
ڈی این اے ٹیسٹ کٹس کے لیے 5 کروڑ 44لاکھ کے فنڈز جاری
کیپشن:    سورس:   creative commons license

  

لاہور (ویب ڈیسک) لاہور سیالکوٹ موٹروے پر خاتون زیادتی کیس میں ملزمان کی تلاش کے حوالے سے ایک نیا معاملہ درپیش، پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی نے اجلاس میں بتایا کہ ان کے پاس ڈی این اے ٹیسٹ کے لیے کٹس نہیں، کٹس کے لیے ان کو نئے مالی سال کے دوران فنڈز ہی نہیں ملے جس پر وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان نے فوری طور پر نوٹس لیتے ہوئے فنڈز جاری کرنے کے احکامات جاری کردئیے ہیں۔

انہوں نے فوری طور پر محکمہ خزانہ پنجاب کو ہدایت دی کہ پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی کے پاس فرانزک کرنے کے لیے کیمیکل کٹس فوری طور پر فراہم کرنے کے لیے فنڈز جاری کئے جائیں تاکہ بروقت ایل سی کھول کر درآمد کی جاسکیں، محکمہ خزانہ پنجاب کی جانب سے 5 کروڑ 44 لاکھ روپے کے فنڈز جاری کئے گئے ہیں اور اس کے لیے رولز کو بھی نرم کیا گیا ہے تاکہ تاخیر نہ ہو، ڈاکٹر اشرف ڈی جی پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی کے مطابق مالی سال 2020-21 کے لیے محکمہ خزانہ پنجاب کی جانب سے فنڈز ہی نہیں جاری کئے گئے تھے۔

دریں اثنا محکمہ خزانہ پنجاب کی جانب سے پنجاب فرانزک لیب کو فوری طور پر 5 کروڑ 44لاکھ روپے جاری کرنے کی تصدیق کی گئی ہے اب ملزمان کی تلاش کے لیے ڈی این اے ٹیسٹ شروع کردے گی۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -