صدر ٹرمپ نے بحرین اور اسرائیل کے درمیان امن معاہدے کا اعلان کردیا

صدر ٹرمپ نے بحرین اور اسرائیل کے درمیان امن معاہدے کا اعلان کردیا
صدر ٹرمپ نے بحرین اور اسرائیل کے درمیان امن معاہدے کا اعلان کردیا
کیپشن:    سورس:   creative commons license

  

منامہ(مانیٹرنگ ڈیسک) پہلے متحدہ عرب امارات، پھر سربیا اور کوسوو اور اب بحرین۔ ایک کے بعد ایک ملک امریکی کی ثالثی میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کرتا چلا جا رہا ہے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق اسرائیل اور بحرین کے مابین اس امن معاہدے کا اعلان بھی حسب سابق امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ کی طرف سے کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ”اسرائیل اور بحرین بالآخر تاریخی معاہدے تک پہنچ گئے جس کے تحت دونوں ملک باہمی تعلقات کو مکمل طور پر نارمل کریں گے۔“

صدر ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ میں لکھا کہ ”30دنوں میں بحرین دوسرا عرب ملک ہے جس نے اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کیا ہے۔“رپورٹ کے مطابق دہائیوں سے عرب ممالک کی طرف سے اسرائیل کا بائیکاٹ جاری تھا اور ان کا اصرار تھا کہ وہ صرف اسی صورت میں اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کریں گے جب فلسطین کا تنازعہ حل ہو جائے گا، لیکن گزشتہ ماہ اپنے اس دیرینہ موقف سے یوٹرن لیتے ہوئے متحدہ عرب امارات نے اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنے کا معاہدہ کر لیا اور اب بحرین بھی اسی کی ڈگر پر چل نکلا ہے۔ امریکی صدر ٹرمپ نے رواں سال جنوری میں ’مشرق وسطیٰ امن پلان‘ جاری کیا تھا جس میں اسرائیل اور فلسطین کا تنازعہ حل کرنے کا عہد کیا گیا تھا۔ یہ امن معاہدے اسے امن پلان کے تحت ہو رہے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -