سوئی سدرن گیس کمپنی کے چار بڑے سرکاری و نجی ادارے 64 ارب کے نادہندہ ہیں

سوئی سدرن گیس کمپنی کے چار بڑے سرکاری و نجی ادارے 64 ارب کے نادہندہ ہیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد (آئی این پی) سوئی سدرن گیس کمپنی کے ترجمان یوسف جمال انصاری نے کہا ہے کہ چار بڑے سرکاری و نجی ادارے 64 ارب روپے کا نادہندہ ہیں حکومت وصولی میں تعاون کرے ورنہ کمپنی ڈوب جائے گی‘ کے ای ایس سی نے 46 ارب روپے‘ سٹیل ملز 13.43 ارب‘ واپڈا 3.2 ارب جبکہ ڈی ایچ اے کے کراچی میں کو جن پاور پلانٹ نے 1.168 ارب روپے ادا کرنے ہیں‘ پاکستان سٹیل ملز ہر ماہ 50کروڑ کی گیس استعمال کرتی ہے جبکہ صرف 10کروڑ کی ادائیگی کی جاتی ہے‘ ماہوار 40 کروڑ سٹیل ملز پر گیس بل کی مد میں چڑھ رہے ہیں اگر کنکشن کاٹ دیں تو سٹیل ملز کا پلانٹ بند ہوجائے گا‘ سیکرٹری پروڈکشن بھی سٹیل ملز سے واجبات کی وصولی میں کوئی تعاون نہیں کررہے ‘ کے ای ایس سی اور واپڈا کی گیس کاٹ دیں تو کراچی اور سندھ اندھیرے میں ڈوب جائے گا‘ حبیب اﷲ کوسٹل پاور پلانٹ 71 کروڑ کا نادہندہ ہے لیکن بلوچستان میں امن و امان کی خراب صورتحال کی وجہ سے کمپنی کے اہلکار وہاں جا کر کنکشن کاٹنے سے معذور ہیں۔ جمعہ کو” آئی این پی“ سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گزشتہ دنوں کمپنی کی انتظامیہ نے 79 ارب روپے کے نادہندگان کے خلاف کارروائی اور گیس کاٹنے کا فیصلہ کیا مگر افسوسناک بات یہ ہے کہ 64 ارب روپے کے نادہندگان بڑے سرکاری و نجی ادارے ہیں۔ نادہندگان میں دوسرے نمبر پر پاکستان سٹیل ملز نے 13.4 ارب روپے ادا کرنے ہیں جبکہ ماہوار 40کروڑ روپے مزید سٹیل ملز پر چڑھ رہے ہیں پاکستان سٹیل ملز ہر ماہ 50کروڑ روپے کی گیس استعمال کرتی ہے جبکہ صرف 10 کروڑ کا بل وصول ہوتا ہے جبکہ اگر گیس منقطع کردیں تو پاکستان سٹیل ملز کا مین پلانٹ بند ہوجائے گا جو کہ حکومت کا ایک بہت بڑا نقصان ہوگا۔ سٹیل ملز پر واجب الادا رقم کی وصولی کیلئے گزشتہ دنوں وفاقی سیکرٹری پروڈکشن کو بلایا تھا مگر انہوں نے وعدہ کرنے کے باوجود ایک پائی نہیں دلائی واپڈا نے سوئی سدرن گیس کمپنی کے 3.2 ارب روپے ادا کرنے ہیں۔
سوئی سدرن

مزید :

صفحہ آخر -