ایسا قبیلہ جس سے کینسر اور شوگر کو ’خوف ‘ آتا ہے

ایسا قبیلہ جس سے کینسر اور شوگر کو ’خوف ‘ آتا ہے
ایسا قبیلہ جس سے کینسر اور شوگر کو ’خوف ‘ آتا ہے

  

لندن (بیورورپورٹ)برطانوی ذرائع ابلاغ نے انکشاف کیا ہے کہ ایکواڈور میں ایسے انوکھے افراد موجود ہیں جو زندگی بھر کینسر اور ذیابیطس جیسے امراض کا شکار نہیں ہوسکتے۔ جنوبی امریکی ملک ایکواڈور کی لارن نامی یہ کمیونٹی ایسے افراد پر مشتمل ہے جن کے جسم میں قدرتی طور پر آئی جی ایف ون نامی ہارمون نہیں پایا جاتا انسانی جسم میں پایا جانیوالا یہ ہارمون کینسر اور ذیابیطس جیسے امراض کا سبب بنتا ہے جبکہ پستہ قامت ان انوکھے افرادکے خون میں شامل خلیات قدرتی طور پر آئی جی ایف ون ہارمون بننے نہیں دیتے جسکے نتیجے میں یہ افراد زندگی بھر ان مہلک امراض کا شکار نہیں ہو نگے ۔ایکواڈور میں ایک چھوٹے سے گاو¿ں کے رہائشی لارون کمیونٹی کے کل افراد کی تعداد تین سو تک ہے جن کااوسطاً قد 4 فٹ تک ہوتا ہے ۔ طبی ماہرین نے ان افراد کاڈی این اے حاصل کر لیا ہے جس کی مدد سے وہ ایک ایسی دوا کی تیاری میں مصروف ہیں جو کینسر اور ذیابیطس سے محفوظ رکھنے کیلئے مدد گار ثابت ہو سکے۔

مزید : تعلیم و صحت