شیخوپورہ میں پاکستان کی پہلی جدید ماڈل مویشی منڈی کا قیام

شیخوپورہ میں پاکستان کی پہلی جدید ماڈل مویشی منڈی کا قیام
شیخوپورہ میں پاکستان کی پہلی جدید ماڈل مویشی منڈی کا قیام

  

وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف کی قیادت میں پنجاب حکومت نے صوبے کے عوام کے مفادات کو مد نظر رکھتے ہوئے انقلابی فیصلے کئے ہیں۔ پنجاب حکومت کاہر قدم ترقی کی جانب پیشرفت ہے۔ صوبے کے محنت کشوں، چھوٹے کاشتکاروں او رمحروم معاشی طبقات کی فلاح کے لئے مثالی منصوبے کامیابی سے جاری ہیں۔شہبازشریف کا بطورخادم پنجاب ہر فیصلہ اورقدم عوام کی فلاح کی جانب اٹھ رہاہے۔وزیر اعلی کی کام سے لگن اور ترقی کے جذبے کے دوسرے ممالک کے لوگ بھی معترف ہو رہے ہیں۔ جیسا کہ حال ہی میں اعلیٰ چینی حکام نے ایک اجلاس میں کہا کہ چین میں انتھک محنت کرنے والے کو شہباز شریف کے شاگرد کے نام سے جانا جاتا ہے۔ ورلڈ بینک کے نائب صدر بھی وزیر اعلیٰ پنجاب کی ولولہ انگیزی، کام سے لگن اور جذبہ دیکھ کر ان کی قابلیت کے معترف ہوئے بغیر نہیں رہ سکے۔

پنجاب حکومت نے کاشتکاروں کی معاشی ترقی کے لئے کئی ایک پروگرام کامیابی سے آگے بڑھائے ہیں۔جدید کاشتکاری کے فروغ کے لئے چھوٹے کاشتکاروں کو شفاف طریقے سے اربوں روپے کے گرین ٹریکٹر فراہم کئے،مویشی پال کاشتکاروں کی سہولت کے لئے بھی کئی ایک اقدامات کئے۔ ایک اہم نوعیت کا مسئلہ جو مویشی منڈیوں اور مویشیوں کی خرید فروخت کے حوالے سے عوام اور مویشی پال حضرات دونوں کو درپیش تھا، وزیر اعلیٰ نے اس طرف اپنی توجہ مرکوز کر کے اس سلسلے میں اہم نوعیت کے فیصلے کئے۔ وزیر اعلیٰ نے اس مسئلے پر خصوصی توجی دیتے ہوئے خطیر رقم خرچ کر کے شیخوپورہ میں اپنی نوعیت کی پہلی اور جدید مویشی منڈی قائم کی ہے۔ اس ماڈل منڈی میں جو سہولتیں فراہم کی گئی ہیں، ان کی مثال اس سے پہلے کسی بھی صوبے میں دیکھنے میں نہیں آئی۔اس ماڈل منڈی میں مویشی پال حضرات کے لئے جدید سہولتیں ایک چھت تلے مہیا کی گئی ہیں۔ان میں جانوروں کے تحفظ کے لئے سٹیل شیڈز، جانوروں کی نیلامی کے لئے الگ احاطہ ، ٹھیکیدار مافیا سے مکمل نجات، سیکیورٹی اور فری ویٹرنری کی سہولت ، عوام کے لئے ہوٹل و مساجد کا قیام اور صاف پانی کی فراہمی شامل ہیں۔اس ماڈل مویشی منڈی کے قیام سے مویشی پال حضرات کو پرچی مافیا سے نجات مل جائے گی۔مویشی منڈیوں کے قیام سے کوئی مویشی پال کاشتکا ر کا استحصال نہیں کرسکے گا۔

پنجاب حکومت ماڈل مویشی منڈیوں کا دائرہ کار پنجاب کے دیگر اضلاع تک پھیلا نے کا ارادہ رکھتی ہے جو یقیناًلائیوسٹاک کے فروغ او راس شعبے سے وابستہ افرا دکو بہترین سہولتوں کی فراہمی کا غماز ہے۔ شیخوپورہ میں قائم کی گئی اس ماڈل مویشی منڈی میں ایسی سہولتیں فراہم کی گئی ہیں جن سے مویشی پال حضرات پورے اطمینان کے ساتھ جانوروں کی خرید فروخت جاری رکھ سکیں گے اور خریداروں کو بھی مناسب قیمتوں پر جانور دستیاب ہوں گے۔ منڈی میں جانوروں کے تحفظ کے لئے خصوصی شیڈز بنائے گئے ہیں، جبکہ سیکیورٹی کا باقاعدہ نظام وضع کیا گیا ہے۔اس ماڈل مویشی منڈی میں ٹرکوں کی فری پارکنگ کی سہولت بھی فراہم کی گئی ہے۔ یہ ایسی ماڈل مویشی منڈی ہے جہاں مویشی پال حضرات کو بین الاقوامی معیار کی سہولتیں فراہم کی گئی ہیں۔ماڈل مویشی منڈیوں میں مویشی پال حضرات کو جانور کی صحیح قیمت اور خریداروں کو مناسب قیمت پر جانور مل سکیں گے۔ ماڈل مویشی منڈیوں میں بائیوگیس کے پلانٹ بھی لگائے جائیں گے اور بائیو گیس کی فراہمی تک سولر انرجی سسٹم کے ذریعے سہولتیں فراہم کی جائیں گی۔ماڈ ل مویشی منڈی کاقیام پنجاب حکومت کا ایسا اقدام ہے جس کی دیگر صوبوں کو بھی تقلید کرنی چاہئے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے پنجاب میں بین الاقوامی معیار کی سہولتوں سے آراستہ ماڈل مویشی منڈی قائم کرکے ایک نئی روایت کی بنیادرکھ دی ہے۔

اس سے قبل ہفتے میں ایک دن مویشی منڈی لگتی تھی اور لوگوں کو جانوروں کی خریداری کے لئے انتظار کرنا پڑتا تھا، اب لوگ مستقل بنیادوں پر مویشی منڈی سے مستفید ہو سکیں گے اور انتظار کی کوفت سے چھٹکارہ حاصل ہو سکے گا۔حکومت نے ماڈل مویشی منڈی میں بینک بھی قائم کیا ہے ۔ بینک کے قیام سے بیوپاریوں کی رقوم محفوظ رہیں گی اور راہزنی کے واقعات میں بھی کمی واقع ہو گی۔حکومت نے اس منڈی میں سلاٹر ہاؤس، وٹرنری ہسپتال، ڈسپنسری اور رہائشی کمروں جیسی سہولتیں مہیا کی ہیں۔ حکومت پنجاب نے 27 کروڑ روپے کی لاگت سے شیخوپورہ میں پہلی مویشی منڈی قائم کر کے اچھا آغاز کیا ہے ۔ اس ماڈل مویشی منڈی میں 2 ہزار سے زائد مویشیوں کی گنجائش موجود ہے، جبکہ ضرورت کے مطابق اس میں مزید توسیع بھی کی جا سکتی ہے۔ صوبے کے دوسرے اضلاع تک ماڈل مویشی منڈی کا دائرہ کار وسیع کرنے کے حوالے سے حکومت تیز رفتاری سے کام جاری رکھے ہوئے ہے۔ پنجاب حکومت جس جانفشانی سے صوبے کے عوام کو سہولتیں فراہم کرنے میں ہمہ وقت کوشاں دکھائی دیتی ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ ماڈل مویشی منڈی کی طرح صوبہ پنجاب بھی ماڈل صوبہ بن کر ابھرے گا۔ماڈل مویشی منڈی کے قیام سے نہ صرف مویشی پال حضرات کو سہولتیں ملی ہیں ،بلکہ لائیوسٹاک کے شعبے سے وابستہ افرادحکومت کے اس فلاحی اقدام سے مستفید ہوں گے اور لائیوسٹاک کا شعبہ فروغ پائے گا۔ امید کی جانی چاہیے کہ پنجاب حکومت صوبے کے ہر ضلع میں ایسی مویشی منڈیاں جلد قائم کرے گی ،تاکہ صوبے بھر میں لوگ حکومت کے اس اقدام سے فائدہ اٹھا سکیں۔

مزید :

کالم -