پریشان بیگمات کے شوہروں کی عمر پر اثرات،سائنس نے بھی دنیا بھر کے مر دوں کے خیالات کی تصدیق کر دی

پریشان بیگمات کے شوہروں کی عمر پر اثرات،سائنس نے بھی دنیا بھر کے مر دوں کے ...
پریشان بیگمات کے شوہروں کی عمر پر اثرات،سائنس نے بھی دنیا بھر کے مر دوں کے خیالات کی تصدیق کر دی

  



نیویارک(نیوزڈیسک)کہتے ہیں بیوی کی باتوں اور عادات کا شوہروں کی زندگی پر براہ راست اثر ہوتا ہے۔ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ ذہنی تناﺅ کی شکار بیویاں اپنے شوہروں کے بلڈ پریشر کو بڑھانے کا باعث بنتی ہیں۔ماہرین نے ایک تحقیق میں اس بات کا جائزہ لیا کہ کسی انسان کے فشار خون میں اس کے اور اس کے جیون ساتھی کا کیا کردار ہوسکتا ہے۔

جرمنی کی ایک خاتون نے فرانس کی مفت سیر کرنے کی خاطر خود کو شرمناک حد تک گرالیا

یونیورسٹی آف مشی گن کے تحقیق کار کیرا برڈیٹ کا کہنا ہے کہ بیویوں کی نسبت شوہر اپنے جیون ساتھی کی پریشانی کی وجہ سے زیادہ ذہنی تناﺅ کا شکار ہوجاتے ہیں جبکہ بیویوں کو اپنے رشتے میں دراڑ کی صورت میں زیادہ تناﺅ محسوس ہوتا ہے۔اس کا کہنا تھا کہ اس کی وجہ یہ ہوسکتی ہے کہ مشکل وقت میں شوہروں کو اپنی بیویوں کی سپورٹ کی ضرورت ہوتی ہے لیکن اگر وہ بھی مشکل کا شکار ہوں تو ایسا ممکن نہیں ہوپاتا۔اسی طرح اگر بیویاں پریشان ہوں تو ان کے شوہر انہیں سپورٹ کرتے ہیں جس کی وجہ سے وہ ذہنی تناﺅ سے باہر آجاتے ہیں لیکن جب انہیں اس طرح کی سپورٹ درکار ہوتی ہے تو وہ انہیں نہیں مل پاتی جس کی وجہ سے ان میں دل کی بیماریاں اور بلند فشار خون کے مسائل زیادہ ہوتے ہیں۔ یہ تحقیق Journals of Gerontologyمیں شائع ہوچکی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس