صوابی ،عمائدین کی کاوشوں سے دیرینہ دشمنی دوستی میں بدل گئی

صوابی ،عمائدین کی کاوشوں سے دیرینہ دشمنی دوستی میں بدل گئی

  



صوابی(بیورورپورٹ)گدون آمازئی میں ایک گھر کے پانچ افراد کے قتل کی پُرانی دشمنی اصلاحی جر گہ گدون کی کوششوں سے دوستی میں بدل گئی۔تفصیلات کے مطابق چودہ اپریل 2014کو موضع کابگنی میں رات کی تاریکی میں فضل آمین ولد سید کریم نے جمیل احمد کے گھر داخل ہو کر گھریلو تنازغہ پر اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں جمیل احمد، اس کی بیوی ، بیٹا جاوید احمد، اس کی بیوی اور چار سالہ بیٹا ہر یان موقع پر جاں بحق جب کہ زوجہ شکیل احمد اور فر حان ولد جاوید احمد زخمی ہو ئے تھے ۔دونوں فریق کے مابین راضی نامہ و صلح صفائی کرانے کے لئے اصلاحی جر گہ گدون کے اراکین الحاج غفور خان جدون سابق صوبائی وزیر،حاجی معمور خا ن جدون،حاجی غریب شاہ ، حاجی فضل قادر ، گل عجب خان ، مولانا فضل باقی، مولانا تاج نبی خان، ضلعی کونسلر فیروز خان جدون، مولانا ابراہیم ، مولانا گل حسین ، گل فارس خان جدون، شکیل خان،ذاکر خان، عدالمالک اور دیگر اراکین نے عملی کوششیں شروع کی اور بلا آخر اس میں کامیاب ہو گئے منگل کے روز جامعہ مسجد کابگنی میں ایک بڑی تقریب منعقد ہوئی جس میں سینکڑوں کی تعداد میں علاقے کے لوگوں ، علماء اور عمائدین نے شرکت کی۔دونوں فریق کے ایک دوسرے کے ساتھ گلے ملوائے اور آئندہ کے لئے بھائی بندی کی طرح زندگی گزارنے کا عہد کیا ۔ ملزم فریق مقتول فریق کو دیت کے طور پر چالیس لاکھ روپے اور تین مکانات دیگا اس موقع پر مولانا عطاء الحق درویش اور الحاج غفور خان جدون نے خطاب کر تے ہوئے اصلاحی جر گہ گدون کے اراکین کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ جرگہ گدون ہمیشہ انصاف کی بنیاد پر فیصلے کر تے ہیں گذشتہ ماہ بھی منگل چائی پہاڑ پر تنازغہ بھی خوش اسلوبی سے حل کیا ۔انہوں نے کہا کہ گدون جرگہ کی ایک حیثیت اور روایت ہے جس کی وجہ سے علاقے کے عوام کو پولیس اور عدالتوں سے نجات ملے گا #

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...