جشن بہار منٹھار2015ء میں بڑے پیمانہ پر بدعنوانیوں کا انکشاف

جشن بہار منٹھار2015ء میں بڑے پیمانہ پر بدعنوانیوں کا انکشاف

  



ملتان ( سپیشل رپورٹر)پارکس اینڈ ہارٹیکلچر اتھارٹی کے بہار منٹھار2015ء میں بڑے پیمانے پر مالی بے ضابطیگیوں کا انکشاف ،اعلی حکومتی شخصیت کی ہدایت پر صوبائی تحقیقاتی اداروں نے انکوائری شروع کرتے ہوئے پی ایچ اے اور سپانسر بلڈر گروپ کے مابین ہونے والے معاہدے کا ریکارڈ قبضہ میں لے لیا ۔قوائد ضوابط کے برعکس ایک ہی بلڈر گروپ کو نوازنے اور سپانسر شپ میں ملنے والی رقوم میں خوردبر د کرنے کی مختلف پہلوؤ ں سے تحقیقات شروع کر دی گئیں ،پی ایچ اے کے سابق افسران کے خلاف جلد کا روائی متوقع ہے ۔ (بقیہ نمبر10صفحہ12پر )

ذرائع سے معلوم ہو ا ہے کہ پی ایچ اے ملتان نے جشن بہار منٹھار ملتان 2015ء کی سپانسر شپ کیلئے باضابطہ طور پر اشتہاردینے کی بجائے قوائد ضوابط کے برعکس ایک ہی بلڈر گروپ ( ڈریم گارڈنز ) کو نوازنے کیلئے اندرون خانہ سپانسر شپ کا معاہدہ کیا جس میں مذکورہ گروپ کو 5ہزار 36بورڈوں کی پبلسٹی کی اجازت کے بدلے سپانسر شپ حاصل کی گئی جس میں 60اور 90لاکھ کی دو متضاد رقوم درج کی گئی ہیں۔ مذکور سپانسر شپ کے زریعے بلڈر کمپنی 20x60کے 16جبکہ 10x20کے 20ہورڈنگ بورڈوں کے ساتھ ساتھ مختلف سائز کے 5ہزار سٹیمر شہر کے مختلف علاقوں اور سٹرکو ں پر آویزاں کرنے تھے مگر معاہدہ کے برعکس مذکورہ بلڈر کمپنی نے سابقہ ڈی جی پی ایچ اے اور پی ایچ اے افسران کی ملی بھگت سے پورے شہر میں پبلسٹی ہورڈنگ بورڈ اور اسٹیمر آویزاں کئے رکھے جبکہ جن کمپنیوں نے پہلے سے پبلسٹی کررکھی تھی ان کے بورڈوں پر بھی لگی ہوئی پبلسٹی سکینیں اتار کر مذکورہ بلڈر کمپنی کی پبلسٹی کی گئی جس سے پی ایچ اے کو پبلسٹی فیس کی مد میں لاکھوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا ۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ معاہدے کے برعکس کی جانے والی پبلسٹی کے عوض سابق ڈائریکٹر ہارٹیکلچر فخرالااسلام ڈوگر کے زریعے سپانسر کمپنی سے اضافی رقم وصول کی گئی جسے ادارے کو جمع کرانے کی بجائے خورد برد کرلیاگیا ۔پنجاب انفارمیشن کمیشن سمیت دیگر تحقیقاتی اداروں نے سپانسر شپ میں ملنے والی رقوم میں خوردبر د کرنے کی مختلف پہلوؤ ں سے تحقیقات شروع کر دی ہیں ، جس کے نتیجہ میں سابق ڈی جی پی ایچ اے اور سابق ڈائریکٹر ہارٹیکلچر سمیت پی ایچ اے کے دیگر ملوث افسروں واہلکاروں کے خلاف جلد کا روائی متوقع ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...