اختیارات سے تجاوز پر ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے کیخلاف انکوائری شروع

اختیارات سے تجاوز پر ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے کیخلاف انکوائری شروع

  



ملتان(نمائندہ خصوصی)نیب ملتان بیورو نے اختیارات کے ناجائز استعمال قواعد سے ہٹ کر نجی ہاؤسنگ سکیموں کی منظوری اور واپڈا ٹاؤن سوسائٹی میں لاکھوں روپے کی رشوت لینے کی شکایات پر ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے محمد الطاف حسین ساریو کے خلاف انکوائری شروع کردی ہے۔اس سلسلے (بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

میں نیب ملتان بیورو نے مدعی جنرل سیکرٹری ایمپلائز یونین(سی بی اے)ایم ڈی اے غفار احمد شاہد کو15اپریل کو طلب کرلیا اور درخواست میں عائد کردہ الزامات کے ثبوت بھی لانے کی ہدایات جاری کردیں۔قبل ازیں جنرل سیکرٹری ایمپلائز یونین(سی بی اے)ایم ڈی اے غفار احمد شاہد نے ڈائریکٹر جنرل نیب ملتان بیورو کو دی گئی درخواست میں سنگین نوعیت کے الزام عائد کئے۔درخواست گزار کے مطابق ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے گورنگ باڈی کی68ویں میٹنگ میں کورم پورا نہ ہونے کے باوجود اہم فیصلے کئے جن کی وجہ سے مستقبل میں ایم ڈی اے کوو کروڑوں روپے کے خسارے کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔غفار شاہد کے مطابق گریڈ18میں ریٹائر ہونے والے ایکسین خالد پرویز کو بطور ٹیکنیکل ایڈوائزر بھرتی کیا گیا جوکہ ایم ڈی اے کی گ ورننگ باڈی اس قسم کے فیصلہ نہیں کرسکی۔خالد پرویز کو فائدہ پہنچانے کیلئے آسامی مشتہر ہی نہیں کی گئی۔زکریا شاپنگ سنٹر کو نیلام کرنے کی بجائے صرف کمانے کا ذریعہ بنادیا گیا۔اس ایم ڈی اے کو نقصان پہنچ رہا ہے۔اختیارات کا ناجائز استعمال کرکے رہائشی کوٹھیوں پر لاکھوں اڑا دئیے گئے اب ٹیندر مشتہر کرکے کاغذوں کا پیٹ بھرا جارہا ہے جنرل سیکرٹری ایمپلائز یونین کے مطابق نجی ہاؤسنگ سکیموں کے خلاف کارروائی کی لہر میں مکمل کرپشن کی جارہی ہے واپڈا ٹاؤن ملتان کی کمرشل مارکیٹ کو سیل کردیا گیا بعد ازاں ڈی سیل کرنے کی آڑ میں مبینہ طور پر 5لاکھ رشوت لی۔سٹیلائٹ ہومز اور سمر ہومز کے مالکان کو ڈرادھمکا کر لاکھوں روپے رشوت وصول کی گئی۔نیب ملتان بیورو مذکورہ شکایات سامنے آنے پر انکوائری شروع کردی ہے اور سید مہر علی گیلانی کو انکوائری آفیسر نامزد کردیا۔انکوائری آفیسر نے مذکورہ درخواست کے مدعی کو15اپریل کو طلب کرلیا اور درخواست کے ہمراہ تمام ثبوت بھی لانے کی ہدایات جاری کیں ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...