’ہم وہاں گئے تو پھانسی دے دی جائے گی کیونکہ۔۔۔‘ فرانسیسی ائیرلائن کا عملہ جس نے ایران جانے سے ہی انکار کردیا

’ہم وہاں گئے تو پھانسی دے دی جائے گی کیونکہ۔۔۔‘ فرانسیسی ائیرلائن کا عملہ ...
’ہم وہاں گئے تو پھانسی دے دی جائے گی کیونکہ۔۔۔‘ فرانسیسی ائیرلائن کا عملہ جس نے ایران جانے سے ہی انکار کردیا

  



پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) پہلے تو ایئرفرانس کی ایئرہوسٹسز ایران نہیں جانا چاہتی تھیں کیونکہ انہیں وہاں جہاز سے اترتے ہی حجاب پہننا پڑتا ہے مگر اب اس ائرلائن کے ہم جنس پرست عملے نے ایران جانے سے بالکل ہی انکار کر دیا ہے۔ ایران میں ہم جنس پرستی کی سزا موت ہے اس لیے فرانسیسی ایئرلائن کے ہم جنس پرست عملے کو خطرہ ہے کہ انہیں کہیں وہاں پھانسی ہی نہ دے دی جائے۔ایئرلائنز کے عملے کے ایک ہم جنس پرست رکن لاﺅرنٹ ایم نے فرانسیسی حکومت اور ایئرفرانس کے چیف ایگزیکٹو آفیسر کے نام ایک کھلا خط لکھا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ”ایئرفرانس کا ہم جنس پرست عملہ سزائے موت پانے کے لیے ایران نہیں جانا چاہتا۔ یقینا ہمارے پاسپورٹس پر یہ نہیں لکھا کہ ہم ہم جنس پرست ہیں اور ہمارا یہ عمل ہمارے کام پر بھی اثرانداز نہیں ہوتا لیکن ہمیں ایک ایسے ملک میں جانے پر مجبور کرنا سمجھ سے بالاتر ہے جہاں ہم جنس پرستی ممنوع ہے اور اس کی سزا بھی موت ہے۔“

قریب المرگ پوتے سے مسافروں کی ملاقات کرانے کیلئے پائلٹ نے جہاز روکدیا

ویب سائٹ ”دی لوکل“ کی رپورٹ کے مطابق لاﺅرنٹ ایم نے خط میں واضح کیا ہے کہ ایران میں ہم جنس پرستی کے جرم پر کم عمر افراد کو 74کوڑوں کی سزا دی جاتی ہے اور بالغ افراد کو موت کی سزا دی جاسکتی ہے۔ ویب سائٹ چینج ڈاٹ او آر جی پر ایئرفرانس کے ہم جنس پرست عملے کے ایران جانے کے خلاف ایک آن لائن پٹیشن بھی دائر کی گئی ہے جس پر اب تک 2ہزار سے زائد افراد دستخط کر چکے ہیں۔ واضح رہے کہ اس ہم جنس پرست کے کھلے خط سے محض ایک ہفتہ قبل ایئرفرانس کی ایئرہوسٹسز اور خواتین پائلٹس بھی پروازوں کے ساتھ ایران جانے سے انکار کر چکی ہیں۔ ایئرفرانس کا کہنا ہے کہ ایئرہوسٹسز اور عملے کے دیگر ارکان ایران کے روٹ پر جانے سے انکار کر سکتے ہیں، اس پر انہیں کوئی سزا نہیں دی جائے گی۔ایئرفرانس نے 2008ءمیں ایران کے لیے اپنی فلائٹس بند کر دی تھی مگر اب ایران سے اقتصادی پابندیاں اٹھنے کے بعد ایک بار پھر آپریشن شروع کرنے جا رہی ہے مگر اب اس کا زیادہ تر عملہ وہاں جانے سے انکار کر رہا ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...