سعودی عرب کو بڑا جھٹکا لگ گیا، اس کے خلاف ایسا کام ہوگیا جس کا کچھ عرصہ قبل تک تصور بھی نہ کیا جاسکتا تھا

سعودی عرب کو بڑا جھٹکا لگ گیا، اس کے خلاف ایسا کام ہوگیا جس کا کچھ عرصہ قبل تک ...
سعودی عرب کو بڑا جھٹکا لگ گیا، اس کے خلاف ایسا کام ہوگیا جس کا کچھ عرصہ قبل تک تصور بھی نہ کیا جاسکتا تھا

  



ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) بین الاقوامی ریٹنگ ایجنسی فچ ریٹنگز (Fitch Ratings)نے گزشتہ روز سعودی عرب کی طویل المدتی کریڈٹ ریٹنگ AAسے کم کرکے AA- کردی اور ساتھ یہ تشویشناک بات بھی کہہ دی کہ مملکت کی پوزیشن اس کیٹیگری میں موجود دیگر ممالک کی نسبت کمزور ہے، اور حالات جلد بہتر ہوتے نظر نہیں آتے۔

عرب حکومتیں بڑی مشکل میں پھنس گئیں، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، قطر اور کویت کو وہ کام کرنا پڑگیا جو پہلے کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا

ایجنسی کا کہنا ہے کہ ایران کے ساتھ کشیدگی اور اقتصادی پالیسی کی غیر یقینی صورتحال، ریٹنگ میں کمی کی بنیادی وجوہات ہیں۔ تیل کی قیمت میں غیر معمولی کمی اور سعودی عرب کی طرف سے دیگر ذرائع آمدنی پر انحصار بڑھانے کی کوششوں کے غیر یقینی نتائج کے خدشات کے تحت عالمی ادارے نے سعودی ریٹنگ میں جلد نمایاں بہتری کی توقع ظاہر نہیں کی۔ ایجنسی کا یہ بھی کہنا ہے کہ سعودی عرب کو AA- کیٹیگری کے دیگر ممالک کی نسبت زیادہ جیو پولیٹیکل خطرات کا سامنا ہے، جبکہ یہ دیگر اشاریوں میں بھی اپنے ساتھی ممالک کی نسبت کمزور ہے۔ ان اشاریوں میں جی ڈی پی اور ورلڈ بینک کی طرف سے مقرر کئے گئے حکومتی پیمانے، احتساب اور قانون کی بالادستی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے پہلے فروری کے مہینے میں بین الاقوامی ریٹنگ ایجنسی Standard and Poor نے بھی تیل کی قیمتوں میں کمی کے پیش نظر سعودی عرب کی کریڈٹ ریٹنگ کم کرکے A- کر دی ہے۔ یہ صورتحال غریب ممالک کے لئے تو معمول کی بات ہے لیکن سعودی عرب جیسے مالدار ملک نے کبھی اس کا تصور بھی نہ کیا تھا۔ کریڈٹ ریٹنگ میں کمی کا مطلب عالمی اداروں کی طرف سے مملکت کی معیشت پر اعتماد میں کمی ہے، جس کا ایک نتیجہ بیرونی قرضوں کے حصول میں مشکلات اور مہنگے قرضوں کی صورت میں بھی نکل سکتا ہے۔

مزید : عرب دنیا


loading...