منسٹری آف کلائمیٹ چینج کے زیرِاہتمام ساتویں سیکوسان کانفرنس کا انعقاد

منسٹری آف کلائمیٹ چینج کے زیرِاہتمام ساتویں سیکوسان کانفرنس کا انعقاد

  

اسلام آباد( پ ر)منسٹری آف کلائمیٹ چینج حکومت پاکستا ن کے زیرِاہتمام اسلام آباد میں ساتویں سیکوسان SACOSAN کانفرنس کا انعقاد ہوا جس میں تمام سارک SAARAC ممبر ممالک کے نمائندگان نے شرکت کی۔کانفرنس کی افتتاحی تقریب میں صدرِ پاکستان ممنوں حسین اور وفاقی وزیر برائے ماحولیات مشاہد اللہ خان نے دُنیا بھر سے آئے شرکا کوخوش آمدید کہا اور اس ضروری موضوع پہ کانفرنس کے انعقاد کوانتہائی اہم قرار دیا۔اربن یونٹ نے کانفرنس میں آرسینک آبز رویٹری Arsenic Observatory کے تعارفی سیشن کا انعقادکیا ۔ اربن یونٹ کے سی ای او ڈاکٹر ناصر جاوید کا کہنا تھا کہ انڈس بیسن کے نزدیک آرسینک سے آلودہ پانی کے باعث پچاس سے ساٹھ ملین لوگوں کی زندگیوں کو خطرہ ہے ۔اربن یونٹ نے الجزی اکیڈمی میں آرسینک مینجمینٹ نیوکلیسAMU کے نام سے ایک پالیسی سپورٹ یونٹ قائم کی ہے۔اس پالیسی سپورٹ یونٹ کا مقصد آرسینک سے آلودہ پانی والے علاقوں کی نشاندہی کر نا اورعوامی آگہی سے لو گو ں کی زندگیوں کو محفوظ بناناہے۔ الجزی اکیڈمی کی پرنسپل ڈاکٹر کرن فرحان کا کہنا تھا کہ پالیسی سپورٹ یونٹ تحقیقی کام کے ساتھ تمام واٹریوٹیلیٹیز کی ٹریننگ میں بھی مدد فراہم کرے گی ۔عوام کی صحت کے تحفظ کے لئے پالیسی سپورٹ یونٹ کا ڈیش بورڈ تجزیے اور پالیسی سازی کے کام میں بھی مدد دے گا۔ابھی تک الجزی اکیڈمی نے پاکستا ن کونسل آف واٹرریسورسز پنجاب اور UNICEFکا ڈیٹاآرسینک آبز رویٹری Arsenic Observatory کے ویب پورٹل میں Mapکر دیا ہے۔مزید ڈیٹا اپڈیشن اور تحقیقی کام ابھی جاری ہے

۔ شرکا اور محقین کا کہنا تھا کہ خدمتِ انسانیت کے لئے اربن یونٹ کی یہ کاوش قابلِ تحسین ہے۔ کانفرنس میں نیپال، بھوٹان،مالدیپ، انڈیا، افغانستان، بنگلہ دیش، سری لنکا ، پاکستان اور دُنیا بھر سے واٹر اینڈ سینیٹیشن ایکسپرٹس نے شرکت کی اور اپنے ممالک کی case studies اور country reportsپیش کیں۔

مزید :

کامرس -