تحصیل جتوئی میں موجودہ سیاسی صورتحال کو شہریوں نے ٹوپی ڈرامہ قرار دیدیا

تحصیل جتوئی میں موجودہ سیاسی صورتحال کو شہریوں نے ٹوپی ڈرامہ قرار دیدیا

چوک مکول( نامہ نگار )بخاری خاندان میں پڑنے والی دراڑ کھل کر سامنے آگئی۔ چند روز قبل ممبر قومی اسمبلی باسط سلطان بخاری نے ن لیگ سے علیحدگی اختیار کرلی جبکہ دوسرا بھائی ہارون (بقیہ نمبر43صفحہ12پر )

سلطان بخاری جو اس وقت مسلم لیگ ن کے زیر سایہ وزارت کا قلمدان سنبھالے ہوئے ہیں باسط سلطان کی پریس کانفرنس کے بعد مسلم لیگ ن پنجاب کی جانب سے سخت باز پرس کے بعد ہارون سلطان بخاری دو روز تک اعلیٰ قیادت کو اپنی وفاداری کا یقین دلاتے رہے. دوسری جانب تحصیل جتوئی کی معصوم عوام شش و پنج کا شکار تھی ان کے ذہن میں معصوم سوالات جنم لے رہے تھے کئی دہائیوں سے ظلم و ستم کی چکی میں پسنے والی عوام نے سکھ کا سانس لیا عوام اب سمجھ چکی ہے کہ بخاری خاندان کے عروج کا سورج اب غروب ہونے کو ہے۔ بجھتے چراغ کی مانند ہارون بخاری نے بھی پھڑ پھڑانا شروع کردیا. اپنے اقتدار کے نشے کو اترتا دیکھتے ہوئے انہوں نے ایک بار پھر لالی پاپ دینے اپنی جھوٹی کارکردگی دکھانے اور اپنے دور میں ترقیاتی منصوبوں کو مثالی کرپشن کی بھینٹ چڑھا کر کروڑوں روپے کی لوٹ مار کو چھپانے کی کوششیں تیز کردی۔ ایک سروے نے تحصیل جتوئی میں ناکام ترقیاتی منصوبوں، جھوٹے مقدمات، سود خوروں کی سرپرستی جیسے الزامات سامنے آئے۔ عوامی سروے نے بخاری خاندان کو 90 فیصد ناپسندیدہ قرار دے دیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر