سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملوں کی مذمت کرتے ہیں، حافظ عبدالکریم

سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملوں کی مذمت کرتے ہیں، حافظ عبدالکریم

لاہور (ایجوکیشن رپورٹر) مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے ناظم اعلیٰ اور وفاقی وزیر مواصلات ڈاکٹر حافظ عبدالکریم نے حوثی شدت پسندوں کی طرف سے سعودی عرب پر بیلسٹک میزائل حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ حوثیوں کے بیلسٹک میزائل حملے خطے کی سلامتی کے لیے خطرہ ہیں۔یمنی باغیوں کو اسلحہ کی ترسیل روکنے سے متعلق اقوام متحدہ کی قرارداد 2216 پر مکمل طورپر عمل درآمد ہونا چاہیے۔ بین الاقوامی عسکری اتحاد کا حوثی شیعہ باغیوں کے خلاف جنگ کا مقصد خطے میں ایران کے توسیعی عزائم روکنا ہے۔ ایران کی توسیع پسندانہ سوچ کا نتیجہ آج کے شام، عراق اور لبنان میں دیکھا جا سکتا ہے۔مرکز راوی روڈ سے جاری اپنے بیا ن میں ڈاکٹر حافظ عبدالکریم کا کہنا تھا کہ سرزمین حرمین الشریفین کے تحفظ کیلئے پاکستان کو سعودی عرب کی ہر ممکن مدد کرنی چاہیے۔یمن میں باغیوں کے عزائم خطرناک ہیں۔ مسلم حکمرانوں کو مل کر سعودی عرب کے خلاف سازشوں کا سدباب کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی و عسکری قیادت کاسعودی عرب سے دفاعی تعاون کا فیصلہ پوری قوم کے دل کی آواز ہے۔پوری پاکستانی قوم سرزمین حرمین الشریفین کے تحفظ کے لیے کٹ مرنے کو تیار ہے۔مسلمانوں کے روحانی مرکز کے گرد گھیرا تنگ کرنے کی سازشیں ان شاء اللہ کامیاب نہیں ہوں گی۔ انہوں نے کہاکہ حقیقت میں یمن کے باغیوں کا اصل ہدف سعودی عرب ہے۔ حوثی باغیوں کی سیاسی اور فوجی اعتبار سے مدد کی جارہی ہے۔انہوں نے کہاکہ سعودی عرب عالم اسلام کا روحانی مرکز ہے، جس کی حفاظت مسلمان اپنا فرض سمجھتے ہیں۔ مسلم ملکوں میں بغاوتوں کو ہوا دے کر قتل و غارت کی راہ ہموار کرنا عالم کفر کا وطیرہ رہا ہے۔ سعودی عرب نے ہمیشہ پاکستان کا ساتھ دیا ہے، مشکل کی اس گھڑی میں پاکستانی قوم ان کے لیے اپنا سب کچھ قربان کرنے کو تیار ہیں۔ حافظ عبدالکریم نے کہا کہ صلیبیوں و یہودیوں کی حرمین الشریفین کیخلاف سازشوں سے پوری امت کو آگاہ کریں گے۔سعودی عرب مسلمانوں کا روحانی اور پاکستان دفاعی مرکز ہے۔ حرمین الشریفین کا تحفظ اپنا دینی فریضہ سمجھ کر اداکریں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1