بجٹ میں ٹرانسپور ٹ سیکٹر کو ریلیف دینے کے لیے خصوصی پیکیج دیا جائے، نبیل محمو د

بجٹ میں ٹرانسپور ٹ سیکٹر کو ریلیف دینے کے لیے خصوصی پیکیج دیا جائے، نبیل ...

  

لاہور (اسد اقبال )وفاقی حکومت آئندہ مالی سال کے بجٹ برائے 2018-19 میں ٹرانسپور ٹ سیکٹر، انڈسٹری اور کاروبار کو ریلیف دینے کے لیے خصوصی پیکج جبکہ ملکی معیشت کو مستحکم کر نے کے لیے معاشی اصلا حات وقت کی ضرورت ہے کیو نکہ سی پیک منصو بہ پاکستان کی قسمت بدلنے والا ہے جس میں سب سے اہم کردار گڈزٹرانسپورٹ کا ہو گا۔ا اربوں روپے سالانہ ایڈوانس ریونیو جمع کرانے والے ٹرانسپورٹ سیکٹرکو ریلیف اور امپورٹ ڈیوٹی میں چھوٹ دی جائے کاروباری سر گر میوں کو پروان چڑھانے کے لیے وفاقی حکو مت ڈیزل کی قیمتیں سہ ماہی بنیادوں پر فکس کرے ۔ان خیالات کا اظہار پاکستان گڈز ٹرانسپورٹ ایسو سی ایشن کے جنرل سیکرٹری نبیل محمو د طارق نے "پاکستان بجٹ تجاویز"میں کیا ۔ نبیل محمود طارق نے کہا کہ وفاقی حکومت سی پیک منصو بہ کے پیش نظر آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ہیو ی لو ڈرگاڑیوں پر عائدڈیوٹی ٹیکس میں واضح کمی کر تے ہوئے انڈسٹری کی طرح ٹرانسپورٹ سیکٹر کو بھی صفر مارک اپ پر قرضوں کی فراہمی یقینی بنائے ۔ بجلی کی طو یل بند ش سے جہاں کارخانوں میں پیداواری عمل رک گیا ہے وہیں مہنگائی کا گراف بھی بلند ہوا ہے ۔نبیل محمود نے کہا کہ گڈز ٹرانسپورٹ واحد سیکٹر ہے جو حکو مت کو سالانہ ٹو ل ٹیکس ، ویلتھ ٹیکس ، ٹو کن ٹیکس ، جی ایس ٹی ،روٹ پر مٹ اور ود ہو لڈنگ ٹیکس کی مد میں اربوں روپے کا ٹیکس ادا کرتاہے جس کے باوجود وفاقی و صوبائی حکومت نے ہمارے مسائل حل کر نے پر کبھی تو جہ نہیں دی ۔ ایک وہیکل 40ہزار سے زائد ماہانہ ٹیکس ادا کر تاہے جبکہ ملک بھر میں لاکھوں گاڑیاں مال برداری کے نظام میں روزانہ شاہراہوں پر ہو تی ہیں۔ ٹرانسپورٹ سیکٹر پرنہ تو کوئی محکمانہ تو جہ ہے اور نہ ہی کوئی ریلیف دیا جاتا ہے ۔ وفاقی حکو مت ملک میں کاروباری سر گر میوں اور انڈسٹری کی بہتری کے لیے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں سہ ماہی بنیادوں پر فکسڈ کر ے اور عوام دوست بجٹ پیش کرے ۔

نبیل محمود

مزید :

صفحہ آخر -