سانحہ ماڈل ٹاؤں استغاثہ، پولیس اور انتظامیہ کے 116افسروں، اہلکاروں پر فردِ جرم عائد

سانحہ ماڈل ٹاؤں استغاثہ، پولیس اور انتظامیہ کے 116افسروں، اہلکاروں پر فردِ ...

  

لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت نے ایک سال بعد سانحہ ماڈل ٹاؤن استغاثہ میں پولیس اور انتظامیہ کے 116افسر وں واہلکاروں پرفرد جرم عائد کر دی جبکہ فرد جرم عائد کئے جانے کے بعد عدالت میں موجود ملزمان نے صحت جرم سے انکار کر دیا۔انسداد دہشت گردی کی عدالت نے ادارہ منہاج القران کو آئندہ گواہ پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 14اپریل تک ملتوی کردی ہے ۔ عدالت نے ادارہ منہاج القران کی طرف سے دائرپرائیویٹ استغاثے میں ایس ایس پی طارق عزیز،سلمان علی خان ،ڈی آئی جی رانا عبدالجبار کیپٹن،عثمان اورعمرورک سمیت 116افسروں اور اہلکاروں پر فرد جرم عائد کر تے ہوئے گواہوں کو چودہ اپریل کو طلب کر لیا،استغاثہ 15مارچ 2016ء میں دائر ہوا،7فروری 2017ء میں طلبی کے بعد پولیس افسران وقفے وقفے سے پیش عدالت میں ہوتے رہے، ملزمان مکمل نہ ہونے سے ان کی حاضری مکمل نہ ہو سکی ، اس دوران متفرق درخواستیں دائر ہوتی رہیں،آخر کار اب انسداد دہشت گرد ی کی عدالت نے مذکورہ افراد پرفرد جرم عائد کردی ہے۔ ڈی آئی جی رانا عبدالجبار عدالت میں پیش نہ ہوئے جس پر عدالت نے ان کے وکیل کو ہدایت کی کہ آئندہ سماعت پر انہیں پیش کیا جائے۔

مزید :

صفحہ آخر -