تارکین وطن کے ووٹ کا سٹنگ سسٹم مکمل محفوظ، نادرا

تارکین وطن کے ووٹ کا سٹنگ سسٹم مکمل محفوظ، نادرا

اسلام آباد ( صباح نیوز)عدالت عظمی کے آڈیٹوریم میں تارکین وطن کو ووٹ کی سہولت دینے سے متعلق چیئرمین نادرا نے بریفنگ دی ہے ،چیف جسٹس میاں ثاقب نثارکی سربراہی میں تین رکنی بینچ کو چئیرمین نادرا کی طرف سے بریفنگ دی گئی جس میں مسلم لیگ ن کے مشاہد حسین سید، مرتضی جاوید عباسی، نزہت صادق ،تحریک انصاف کے چوہدری سرور، شفقت محمود، شریں مزاری، عارف علوی، فواد چوہدری ، مسلم لیگ ضیا کے سربراہ اعجاز الحق اور پیپلزپارٹی کی جانب سے نوید قمر اور نئیر حسین بخاری ، چیف الیکشن کمشنر سردار رضا خان سیکرٹری داخلہ اورسیکرٹری خارجہ نے بھی شرکت کی ، چیئرمین نادرا عثمان یوسف مبین نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ووٹ کے لئے تارکین وطن پہلے ویب سائٹ میں اپنے آپ کو رجسٹر کرے گاپھر ویب سائٹ میں اس شخص کو ایک کوڈ دیا جائے گا۔کوڈ کی تصدیق کے بعد اس سے چند سوالات کئے جائینگے۔ جوابات کی نادرا اور الیکشن کمیشن کے ڈیٹا بیس سے تصدیق کی جائیگی۔چیئرمین نادرا نے کہاکہ ان سوالات کی تصدیق کے بعدووٹ کے لئے اور ووٹ کاسٹ کرنے کے لئے بھی آپشن دیئے جائیں گے۔چیئرمین نادرا کے مطابق ووٹ کاسٹ کرنے کے لئے بنایا گیا سسٹم مکمل محفوظ ہے، جو پاکستانی ملک سے باہر ایک بار آن لائن ووٹ کاسٹ کرے گا اس کا پاکستانی انتخابی حلقے سے نام کٹ جائے گا۔ایک ووٹر قومی اور صوبائی اسمبلی کے دونوں ووٹ کاسٹ کرسکے گا۔الیکشن کمیشن ویب سائٹ پر باقاعدہ آن لائن پولنگ شروع اور بند کرے گا۔ پولنگ شروع اور بند کرنے کا عمل پاکستانی وقت کے مطابق ہوگا، ووٹنگ سسٹم نادرا اور الیکشن کمیشن دونوں کی ویب سائٹس سے منسلک ہوگا، ووٹرز کی سہولت کے لئے سافٹ وئیر اردواور انگلش میں تیار کیاگیاہے ، ووٹنگ کے لیے ملنے والاپاسورڈ ایک بار ووٹ کاسٹ کرنے کے لئے ہوگا ۔ اس دوران چیف جسٹس نے استفسار کیاکہ کیا سب اووسیز پاکستانیوں کوووٹ دینے کاحق ہے؟ تو اٹارنی جنرل اشتر علی اوصاف نے کہاکہ ووٹ کا حق ہرپاکستانی کوحاصل ہے صرف طریقہ کار طے ہوناہے ، جسٹس اعجازالاحسن نے کہاکہ پوسٹل بیلٹ کے حق کے استعمال کے لیے بھی ووٹر کی موجودگی ضروری نہیں ، اس دوران پی ٹی آئی کے وکیل انور منصور کان نے کہاکہ دہری شہریت رکھنے والوں کوبھی ووٹ کا حق حاصل ہے ۔جس پر چیف جسٹس نے کہاکہ اوورسیز پاکستانیوں کوووٹ کاحق حاصل ہے صرف طریقہ کار طے ہونا ہے۔

اسلام آباد (صباح نیوز)عدالت عظمی نے تارکین وطن کو ووٹ کی سہولت دینے سے متعلق چیئرمین نادرا کی بریفنگ کے بعدتمام فریقین سے رائے طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ایک ہفتے کے لئے ملتوی کردی۔اس موقع پر سپریم کورٹ میں آئی ٹی ایکسپرٹس نے الیکٹرانک ووٹنگ پرسوال اٹھاتے ہوئے کہاکہ دنیامیں جہاں بھی ووٹنگ کاتجربہ کیاگیاناکام ہواکیونکہ الیکٹرانک ووٹنگ کے نظام کوہیک کرنامشکل نہیں، اگر سسٹم ہیک نہ بھی کیاجائے توبھی ڈیٹاچوری کرنابڑی بات نہیں جبکہ مسلم لیگ ن کے سینٹرمشاہد حسین نے بھی الیکٹرانک ووٹنگ پر تحفظات کااظہار کردیا ہے ۔عدالت عظمی کے آڈیٹوریم میں تارکین وطن کو ووٹ کی سہولت دینے سے متعلق چیئرمین نادرا نے بریفنگ دی ہے ،چیف جسٹس میاں ثاقب نثارکی سربراہی میں تین رکنی بینچ کو چئیرمین نادرا کی طرف سے بریفنگ دی گئی جس میں پاکستان مسلم لیگ ن کے مشاہد حسین سید، مرتضی جاوید عباسی، نزہت صادق ،تحریک انصاف کے چوہدری سرور، شفقت محمود، شریں مزاری، عارف علوی، فواد چوہدری ، مسلم لیگ ضیا کے سربراہ اعجاز الحق اور پیپلزپارٹی پارٹی کی جانب سے نوید قمر اور نئیر حسین بخاری ، چیف الیکشن کمشنر سردار رضا خان سیکرٹری داخلہ اورسیکرٹری خارجہ نے بھی شرکت کی ۔اس موقع پر سپریم کورٹ میں آئی ٹی ایکسپرٹس نے الیکٹرانک ووٹنگ پرسوال اٹھاتے ہوئے کہاکہ دنیامیں جہاں بھی ووٹنگ کاتجربہ کیاگیاناکام ہواکیونکہ الیکٹرانک ووٹنگ کے نظام کوہیک کرنامشکل نہیں، اگر سسٹم ہیک نہ بھی کیاجائے توبھی ڈیٹاچوری کرنابڑی بات نہیں اس دوران ن لیگ کے سینٹرمشاہد حسین کا بھی الیکٹرانک ووٹنگ پر تحفظات کااظہار کرتے ہوئے کہاکہ کم از کم آئندہ انتخابات میں الیکٹرانک ووٹنگ کاتجربہ نہ کیاجائے اور الیکشن کمیشن پر اس کی بساط سے زیادہ بوجھ نہ ڈالاجائے ،الیکشن کمیشن حلقہ بندیاں مکمل کرکے ووٹنگ کروادے یہی بڑی بات ہے۔چیف جسٹس نے عثمان کاکڑ سے مکالمہ کے دوران کہاکہ آپ ان بڑوں کے نام بتائیں جو ووٹ ڈالنے سے منع کرتے ہیں ،تارکین وطن ملک پر مرتے ہیں ہم نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کومایوس نہیں کرنا۔ بعد ازاں عدالت نے معاملے پر تمام فریقین سے رائے طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ایک ہفتے کے لئے ملتوی کردی۔

رائے طلب

مزید : صفحہ آخر