چاہتے ہیں کوئٹہ تفتان کا سفرریل کے ذریعے آٹھ گھنٹے میں طے ہو، سعد رفیق

چاہتے ہیں کوئٹہ تفتان کا سفرریل کے ذریعے آٹھ گھنٹے میں طے ہو، سعد رفیق

  

لاہور(نمائندہ پاکستان)ایران کے وزیر ٹرانسپورٹ عباس آخو ندی کی قیادت میں وفد نے گزشتہ روز وزیر ریلویز خواجہ سعد رفیق سے ملاقات کی ۔ جبکہ ایران کی طرف سے گوادر اور چاہ بہار کی بندرگاہوں کو ریل لنک سے ملانے کی تجویز بھی پیش کی گئی ہے۔ ملاقات میں منسٹر میری ٹائم میر حاصل بزنجو، پاکستان ریلویز اور ایرانی نیشنل ریل کمپنی کے حکام بھی شریک ہوئے۔ جبکہ اس ملاقات میں پاک ایران ریل تعلقات کو مضبوط بنانے پر اتفاق کیا گیا اور 1959 کے معاہدے کو اپ گریڈ بھی کیا جائے گا۔ ای سی او ٹرین، پاک ایران پسنجر ٹرین، ٹوریسٹ ٹرین اور محرم الحرام میں زائرین کی سپیشل ٹرین چلانے کی تجاویز پر بھی ابتدائی طور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔جبکہ وزیر ریلویز خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ ہم کوئٹہ تافتان ٹریک کی بہتری کے لئے ایرانی کمپنیوں کو بی او ٹی کی بنیاد پر معاہدے کی پیشکش کرتے ہیں اورہم چاہتے ہیں کہ کوئٹہ تافتان کا ریل سے سفر بیس کی بجائے آٹھ گھنٹوں میں طے ہو انہوں نے پاک ایران ریل ریلیشن شپ پر جوائنٹ گروپ کی تجویز بھی دی ہے اور سیکرٹری ریلوے بورڈ زبیر شفیع فوری فوکل پرسن مقرر کیا گیا ہے۔ جبکہ جوائنٹ ورکنگ گروپ ایم ایل تھری کی امپروومنٹ اور ریل کے ذریعے تجارت کے فوائد کو سٹڈی کرے گا، خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ پاکستان اور ایران کے ریل کے سربراہوں کی پہلے دو طرفہ اور پھر ترکی کے ساتھ سہ طرفہ باقاعدہ اجلاس ہونے چاہئیں پاکستان اور ایران کے درمیان حکومتوں کے نہیں قوم کے قوم سے رشتے اور تعلق ہیں انہوں نے کہا کہ ہمارے قریب آنے کی رفتار اتنی نہیں جتنی ہونی چاہئے تھی۔

خواجہ سعد رفیق

مزید :

صفحہ آخر -