سی پیک کی بدولت پسماندہ علاقے بھی ترقی کے سفر میں شامل ہوں گے : احسن اقبال

سی پیک کی بدولت پسماندہ علاقے بھی ترقی کے سفر میں شامل ہوں گے : احسن اقبال

  

بیجنگ (آئی این پی) وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ سی پیک کے تحت 29 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کو حقیقت میں ڈھال لیا گیا ہے،پاکستان میں توانائی کے بڑے منصوبے لگ رہے ہیں ،گوادربندرگاہ کی تعمیر و ترقی جاری ہے، سی پیک عالمی سطح پر علاقائی تعاون کا ایک ایسا کلیدی منصوبہ بنے گا جس کی لوگ تقلید کریں گے،اسکی بدولت پاکستان کے پسماندہ اور کم ترقی یافتہ علاقے ترقی کے سفر میں شامل ہو رہے ہیں، سی پیک سے پاکستان میں ای کامرس اور جدید اقتصادی تصورات کو فروغ ملے گا،ہمیں کھلے دل کے ساتھ عالمی اشتراک کو آگے بڑھانا چاہیے، چینی اقدامات عالمی تجارتی نظام اور عالمی معیشت کے مفاد میں ہیں،دنیا کے مسائل دروازے بند کر نے سے نہیں پل کی تعمیر سے حل کیے جا سکتے ہیں۔ بیجنگ میں چائنا ریڈیو انٹرنیشنل کو انٹرویو میں احسن اقبال نے کہا کہ دنیا کے مسائل دروازے بند کرتے ہوئے نہیں بلکہ پل تعمیر کرتے ہوئے حل کیے جا سکتے ہیں۔تمام ممالک کو ایک دوسرے سے اشتراک اور تعاون کرنا ہے اور اگر دروازے بند کر لیے گئے تو اس سے مزید مسائل پیدا ہوں گے۔علاوہ ازیں احسن اقبال نے کہا ہے کہ سی پیک کے تحت ملک میں سات اقتصادی زون قائم کئے جارہے ہیں جس سے ملک میں ترقی کے نئے دور کا آغازہوگا‘ رواں سال پاکستان کی اقتصادی ترقی کی شرح 5.8 فیصد رہی جو 2013 میں 3فیصد پر تھی‘ موجودہ حکومت نے چار سالوں میں مجموعی طور پر ہر سال 2500میگا واٹ بجلی پیدا کی ہے جو توانائی کے شعبے میں ایک بڑا قدم ہے۔ احسن اقبال نے آئی ایم ایف کے زیر اہتمام پیپلز بنک آف چائنہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چار سالوں میں حکومت نے مجموعی طور پر ہر سال پچیس سو میگاواٹ بلی پیدا کی ہے یہ توانائی کے شعبے میں ایک بڑا اقدام ہے۔ ہم نے ملک سے بجلی کی قلت کو ختم کردیا ہے اور سولہ سے اٹھارہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ ختم کردی گئی ہے ان اقدام کے باعث ملک کی صنعتی انڈسٹری تیزی سے ترقی کی جانب گامزن ہے۔ سی پیک کے تحت ملک میں سات اقتصادی زون قائم کئے جارہے ہیں جس سے ملک میں ترقی کے نئے دور کا آغازہوگا۔

مزید :

صفحہ اول -