غلط فیصلے کے بعد حقائق سامنے آرہے ، جے آئی ٹی میں 40نامعلوم افراد نے تفتیش کی : نواز شریف

غلط فیصلے کے بعد حقائق سامنے آرہے ، جے آئی ٹی میں 40نامعلوم افراد نے تفتیش کی : ...

  

اسلام آباد (آئی این پی ،مانیٹرنگ ڈیسک ) مسلم لیگ (ن) کے قائد سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ جے آئی ٹی میں چالیس نامعلوم افراد نے تفتیش کی‘ ہر آنیوالے دنوں میں نئے پول کھل رہے ہیں‘ کیس میں ہوئی ناانصافی پوری قوم کو نظر آرہی ہے‘ پارٹی چھوڑ کر جانیوالوں کے لئے میرے دل میں کوئی قدر نہیں ہے۔ جمعرات کو نواز شریف نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نیب کورٹ میں مقدمے میں بدعنوانی کسی کو نظر نہیں آتی کیس میں ہونے والی ناانصافی پوری قوم کو نظر آرہی ہے مقدمے کے فراڈ حقائق سب کو نظر آرہے ہیں۔ جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء ملک کے مالک نہیں ہیں۔ جے آئی ٹی میں نامعلوم افراد کہاں سے آئے ہر آنے والے دنوں میں نئے پول کھل رہے ہیں جے آئی ٹی رپورٹ میں چالیس لوگ ہیں جن کو کوئی نہیں جانتا۔ پول کھل گیا ہے کہ جے آئی ٹی میں چالیس لوگوں نے تفتیش کی۔ پارٹی چھوڑ ر جانے والوں کے لئے میرے دل میں کوئی قدر نہیں ہے۔دریں اثنا نوازشریف کا مزید کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ اقامے پر آیا اور جھوٹ ثابت ہوا جب کہ غلط فیصلے کے بعد غلط کیس سے حقائق نکل رہے ہیں۔ انویسٹی گیشن کے لیے کن لوگوں کا سہارا لیا گیا، جے آئی ٹی کی رپورٹ بنانے کے لیے 40 لوگ تھے، پول کھل گیا، 30تفتیش کار اور عملے کے 10 لوگ کون تھے؟ سپریم کورٹ کا فیصلہ اقامے پرآیا وہ بھی جھوٹ ثابت ہوا، غلط فیصلے کے بعد غلط کیس سے حقائق نکل رہے ہیں۔عدالت سے انصاف کی امید تو بہت ہے کیونکہ کیس میں کچھ بھی نہیں، اس میں بہت ساری چیزیں خطرناک ہورہی ہیں، جو حقائق چھپائے گئے وہ سامنے آرہے ہیں،تکلیف دہ کہانی ہے اس کی کھوج لگانی چاہیے۔

مزید :

صفحہ اول -