سینیٹ اجلاس میں منی بل اور ایمنسٹی سکیم لانے پر اپوزیشن کا احتجاج ، واک آؤٹ

سینیٹ اجلاس میں منی بل اور ایمنسٹی سکیم لانے پر اپوزیشن کا احتجاج ، واک آؤٹ

اسلام آباد(آن لائن)حکومت کی جانب سے سینٹ میں منی بل اور ایمنسٹی سکیم لانے پر اپوزیشن نے شدید احتجاج کیا اور کہا کہ عوام کو بتا یا جائے کہ کیا ملک میں مالیاتی ایمرجنسی لگائی جارہی ہے کہ حکومت ختم ہونے کے چند ہفتے قبل ہی یہ اقدامات کئے جارہے ہیں، بجٹ سے پہلے منی بل لانا آئین و قانون کی خلاف ورزی ہے یہ بل دونوں ایوانوں کی نفی کر رہا ہے منی بل ، بجٹ کے ذریعے آسکتا ہے ایوان بالا کے اجلاس میں منی بل لانے پر اپوزیشن لیڈر شیری رحمن نے حکومتی معاشی پالیسیوں پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ایس آر او سے ملک چلا رہی ہے۔ قومی اسمبلی ، سینیٹ دونوں ایوانوں کے اجلاس چل رہے ہیں پھر آرڈیننس لانے کی کیا ضرورت ہے۔ منی بل کو ایسے لانا آئین و قواعد کی نفی ہے جس پر چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ منی بل سپیکر کا فیصلہ ہے انہوں نے بھجوایا ہے ،اس پر شیری رحمن نے کہا کہ سپیکر نے غیر معمولی فیصلہ کیا ہے اگر مالی ایمرجنسی ہے تو ہمیں بتائیں عوام اور ملک کو لوٹنا بند کیا جائے۔سینیٹر اعظم خان سواتی نے کہا کہ حکومت کے یہ معاشی اقدامات آئین اور قانون کے خلاف ہیں جن کی ہم مذمت کرتے ہیں،متفقہ اپوزیشن ا رکان ایوان سے واک آوٹ کرتے ہیں ۔ایوان سے واک آوٹ کے بعد پیپلز پارٹی کے سینیٹر مصطفیٰ نواز نے کورم کی نشاندہی کردی کورم پورا نہ ہونے کی وجہ سے اجلاس کی کارروائی معطل کردی گئی۔

سینٹ اجلاس

مزید : صفحہ اول