پاکستان اور فلسطین کے مابین مذہبی ، تاریخی اور برادرانہ تعلقات قائم ہیں ، ظفرالحق

پاکستان اور فلسطین کے مابین مذہبی ، تاریخی اور برادرانہ تعلقات قائم ہیں ، ...

اسلام آباد( آئی این پی ) قائد ایوان سینیٹ و چیئرمین موتمر عالم اسلامی سینیٹر راجہ محمد ظفرالحق نے کہا ہے کہ پاکستان اور فلسطین کے مابین مذہبی ، تاریخی اور برادرانہ تعلقات قائم ہیں ۔پاکستان نے ہمیشہ مسئلہ فلسطین کے حل کیلئے ہر فورم پر بھر پور موقف اختیار کیا ہے ، قائد اعظم محمد علی جناح جب بھی پاکستان کی آزادی کی بات کرتے تھے تو فلسطین کی آزادی پر بھی زور دیتے تھے جس کا واضح ثبوت یہ ہے کہ1940 میں پاس ہونے والی قرارداد پاکستان کے ساتھ فلسطین کی آزادی کیلئے بھی قرارداد پاس کی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ فلسطین کی عوام گزشتہ ایک صدی سے آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں ، مسئلہ فلسطین پر ہر پاکستانی پریشان اور درد رکھتا ہے ۔ وہ جمعرات کو پاکستان میں فلسطین کے سبکدوش ہونے والے سفیر ولید احمد محمود ابو علی کے اعزاز میں پارلیمنٹ ہاؤس میں دیئے گئے ظہرانے سے خطاب کررہے تھے ۔راجہ محمد ظفرالحق نے کہا کہ فلسطین کے سفیر ولیدابو علی د نے جس طرح چھ سال پاکستان میں سفارتی خدمات سرانجام دیں ہیں وہ قابل تحسین ہیں ۔ ان چھ برسوں میں انہوں نے بہت عزت کمائی اور مخلص دوست بنائے ۔ فلسطین سفارتخانے کی شاندارعمارت تعمیر کروائی اور وہاں جانے والے ہر پاکستانی کی بہت عزت کی جاتی ہے ۔

امید کرتے ہیں ولیدابو علی مستقبل میں جہاں بھی سفارتی خدمات سرانجام دیں گے مسلمانوں اور خاص طور پر فلسطین اور کشمیر کے مظلوم عوام کی اُمنگوں کی ترجمانی کرتے رہیں گے ۔راجہ محمد ظفرالحق نے کہا کہ مشرق وسطیٰ کا بڑا مسئلہ فلسطین ہے جب تک فلسطین کے مسئلے کو حل نہیں کیا جائے گا امن کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی علمبردار تنظیموں مسئلہ فلسطین اور کشمیر کے حل کے لئے موثر کردار ادا کریں ۔ ظہرانے کی الوداعی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے فلسطین کے سفیر ولید احمد ابو علی نے کہا کہ پاکستان سے جو عزت و محبت ملی و ہ قابل تعریف ہے ۔

ظفرالحق

مزید : علاقائی