تحریک لبیک کا دھرنا پنجاب کے متعددشہروں تک پھیل گیا، لاہور کے داخلی ،خارجی راستے بند ،ٹریفک جام

تحریک لبیک کا دھرنا پنجاب کے متعددشہروں تک پھیل گیا، لاہور کے داخلی ،خارجی ...

ملتان راولپنڈی ، قصور ، مریدکے ، شیخوپورہ ،لاہور(ایجوکیشن رپورٹر ،کرائمز رپورٹر نمائندگان، نیوز ایجنسیاں )تحریک لبیک کا 11 روز سے داتا دربار پر جاری دھرنا اور احتجاج علامہ خادم رضوی کی جانب سے ’’فیض آباد معاہدے ‘‘ پرمکمل عملدرآمد کے لئے حکومت کو دی گئی ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد پنجاب کے اکثر شہروں میں پھیل گیا ہے ،لاہور کے تمام داخلی راستے بند ،شہر میں ٹریفک بلاک ہو گئی ،سڑکیں بلاک ہونے سے ہزاروں شہری پھنس گئے،دھرناحتمی اورمطالبات کی منظوری تک جاری رہے گا ،کارکن کسی افواہ پر کان نہ دھریں،کوئی بھی کہے کہ مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں اس بات کو نہیں ماننا،تحریک لبیک کے قائدین کا کارکنوں کے نام پیغام۔تفصیلات کے مطابق تحریک لبیک کا 11روز سے داتا دربار کے باہر جاری احتجاج اور دھرنا معاہدوں پر عملدرآمد کے لئے حکومت کو دی گئی ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد پنجاب کے مختلف شہروں میں پھیل گیا ہے جبکہ لاہور کے داخلی راستے بند ہونیاورشہر بھر میں بدترین ٹریفک جام ہونے کی وجہ سے ہزاروں شہری کئی گھنٹوں سے سڑکوں پر خوار ہو تے رہے ، تحریک لبیک کے کارکنوں کی جانب سے شہر کے داخلی اور خارجی راستے بلاک اور معروف شاہراوں کو بند کرنے کے نتیجے میں شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرناپڑرہا ہے۔دوسری طرف علامہ خادم حسین رضوی نے دیگر قائدین کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے لاہور سمیت ملک بھر میں احتجاج کی کال دیتے ہوئے کہا کہ اسلام جو بھی قربانی مانگے گا ہم دینے کے لئے تیار ہیں،جب تک معاہدے پر عملدرآمد نہیں ہو جاتا دھرنے جاری رہیں گے،ہمارااحتجاج پرامن ہو گا لیکن اگرکسی نے ہمیں بلا وجہ چھیڑا تو ہماری گردنیں بھی حاضرہوں گی،جب تک معاہدے پر عمل درآمدنہیں ہوتا ہمارا دھرنا جاری رہے گا۔علامہ خادم رضوی کی کال کے فوری بعد پنجاب کے مختلف شہروں میں تحریک لبیک کے کارکن سڑکوں پر نکل آئے اور مین شاہراہیں بند کر کے احتجاج شروع کر دیا ۔ دوسری طرف تحریک لبیک کے سینکڑوں کارکنوں نے لاہور میں جگہ جگہ احتجاج شروع کر دیا ہے جس کی وجہ سے سڑکیں اور ٹریفک جام ہونے کی وجہ سے شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جبکہ گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگنے کی وجہ سے ہر طرف ٹریفک بلاک نظر آ رہی ہے ،شیخوپورہ میں بھی کارکنوں نے سڑکوں پر نکلتے ہوئے مرکزی شاہراہ بند کر دی ہے ، ٹیکسلا چوک پر بھی شروع ہونے والے دھرنے کی وجہ سے حسن ابدال ،واہ کینٹ تا ٹیکسلا جی ٹی روڈ بلاک ہو چکی ہے ،گجرانوالہ ،گجرات ،جہلم ،قصور ،اوکاڑہ،ساہیوال ،خانیوال،ملتان ، رحیم یار خان سمیت دیگر شہروں میں بھی تحریک لبیک کے کارکن سڑکوں پر نکل آئے ہیں۔تحریک لبیک کے مرکزی راہنما پیر محمد افضل قادری نے کہا ہے کہ تحریک لبیک ملک کی سب سے طاقتور مذہبی تحریک ہے ،پورا ملک تحریک لبیک کے پیچھے ہے ،ملک کی 80سے بڑی شاہرائیں بلاک ہو چکی ہیں جبکہ لاہور شہر کے بھی داخلی اور خارجی راستے بند ہو چکے ہیں ،جب معاہدے پر مکمل عمل درآمد ہوا تما م راستے کھول دیں گے۔ علامہ خادم رضوی کی کال پرجمعرات کی سہ پہر راولپنڈی میں تحریک لبیک پاکستان کے سینکڑوں لٹھ بردار کارکنان لیاقت باغ چوک پہنچ گئے جنہوں نے ٹائر جلا کر لیاقت باغ میں چاروں اطراف کی ٹریفک بلاک کر دی اور لیاقت باغ چوک میں دریاں بچھا کر دھرنا دیا ۔ کارکنوں نے فیض پور انٹر چینج اور لاہور جڑانوالہ روڈ پر فیض پور کے قریب دھرنا دیکر روڈ کو ہر قسم ٹریفک کیلئے بند کر دیا تفصیلات کے مطابق تحریک لبیک یار سول اللہﷺ نے اپنے مطالبات پورے نہ ہونے پر ایک بار پھر دھرنے د ینے شروع کر دیے ہیں تحصیل شرقپورور گردونواح کے سینکڑوں کارکنوں نے موٹر وے فیض پور انٹر چینج اور لاہور جڑانوالہ روڈ پر فیض پور کے قریب دھرنا دے دیا ہے ان کارکنوں کا کہنا ہے کہ وہ اپنے تحریک قائدین کے حکم کے پابند ہیں جبکہ ہمارے مطالبات پورے نہیں ہوتے ہم دھرنے پر بیٹھے رہیں گے۔مرید کے میں بھی رکنان نے جی ٹی روڈ پر ٹریفک بلاک کر دی۔گاڑیوں کی میلوں لمبی لائینیں لگ گئیں۔کارکنا ن کا مطالبات کی مظوری تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان ۔فاروق آباد میں بھی تحریک لبیک پاکستان کی کال پر ہڑتال اور دھرنا،فاروق آباد تحریک لبیک کے امیر کی قیادت میں کیوبی لنک کینال پر دھرنا دے کر سڑک بند کر دی ۔

احتجاج

مزید : کراچی صفحہ اول